پی این ایس سی میرین فیول بنکرنگ میں نئے وینچرز کیلئے کوشاں

پی این ایس سی میرین فیول بنکرنگ میں نئے وینچرز کیلئے کوشاں

کراچی(اسٹاف رپورٹر)پاکستان نیشنل شپنگ کارپوریشن(پی ایس ایس سی) کے زیر اہتمام گزشتہ دنوں پاکستان میں میرین فیول بنکرنگ انڈسٹری کے حوالے سے ایک ورکشاپ کا انعقاد کیا گیا جس میں مقامی و غیر ملکی انڈسٹری ماہرین نے شرکت کی۔پی این ایس سی کے چیئرمین عارف الہیٰ نے اپنے خطاب میں پی این ایس سی کی بنکرنگ وینچرز میں دلچسپی ظاہر کرتے ہوئے اس شعبے میں غیر ملکی سرمایہ کاروں کیلئے موجود نادر مواقعوں کو اجاگر کیا ،ان کا کہنا تھا کہ سی پیک منصوبے کی تکمیل سے پاکستان شپنگ اور توانائی کے شعبے میں خاطر خواہ ترقی کرے گا ۔اس ورکشاپ میں پاکستان،مشرق وسطیٰ اور برطانیہ کی بنکرنگ انڈسٹری سے تعلق رکھنے والے ماہرین نے شرکت کی جس میں ورلڈ فیول سروس لندن کے منیجر سیلزMaximillian Canegie-Jones;،برطانیہ کی لائڈرجسٹر فیول آئل ایڈوائزری سروس کے گلوبل آپریشن منیجر ندیم جاوید ،سادی گروپ آف دبئی کے جنرل منیجر رئیس الحسن ،مجاہد حسن اور ڈان بنکرنگ دبئی کے اعلیٰ حکام بھی شامل تھے ۔ورکشاپ سے خطاب کرنے والوں میں احمد پرویز،سعد مسعود ،سمیع الرحمن اور عادل صلاح الدین بھی شامل تھے ۔ورکشاپ سے خطاب کرتے ہوئے ڈائریکٹر پی این ایس سی فلیٹ طارق مجید نے حکومت پاکستان کی جانب سے بنکرز کی تعمیر پرمراعات،ٹیکس چھوٹ اور تعاون کی تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ ان مراعات کے نتیجے میں پاکستا ن میں بنکرز کا قیا م انتہائی فائدہ مند ہوگیا ہے ۔پی این ایس سی نے گزشتہ برسوں کے دوران انتہائی عمدہ کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہے اور کارپوریشن کا سالانہ منافع 2ارب روپے کے قریب پہنچ گیا ہے ،پی این ایس سی نے اپنی استعداد کو7لاکھ ٹن تک بڑھا دیا ہے جبکہ پاکستان کی تیل مصنوعات کی90فیصد درآمد پی این ایس سی کے جہازوں کے ذریعے ہی ہوتی ہے ،ورکشاپ میں ماہرین نے شپنگ انڈسٹری کو درپیش مشکلات اور چیلنجز کے حوالے سے بھی تبادلہ خیال کیا ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر