باجوڑ لیویز کے اہلکاروں کی برطرفی پر جواب مانگ لیا گیا

باجوڑ لیویز کے اہلکاروں کی برطرفی پر جواب مانگ لیا گیا

پشاور(نیوزرپورٹر)پشاورہائی کورٹ کے جسٹس سید افسرشاہ اور جسٹس ابراہیم خان پرمشتمل دورکنی بنچ نے پولیٹکل ا نتظامیہ کی جانب سے باجوڑلیویزکے اہلکاروں کی برطرفی پرایڈیشنل چیف سیکرٹری فاٹااورسیکرٹری ہوم سے جواب مانگ لیاہے فاضل بنچ نے گذشتہ روز تیمورحیدرایڈوکیٹ کی وساطت سے دائرصوبیدارشاہ ملوک وغیرہ کی جانب سے دائررٹ پٹیشن کی سماعت کی اس موقع پر عدالت کو بتایا گیا کہ درخواست گذار مختلف تحصیلوں میں بطورلیویز تعینات تھے تاہم دہشت گردی کے خلاف جنگ کے دوران وہ رخصت پرچلے گئے تھے اوربعدازاں پولیٹکل انتظامیہ نے انہیں بلاجواز طورپر ملازمت سے برطرف کر دیا گیا تھا لہذا پولیٹکل انتظامیہ کے احکامات کالعدم قرار دے کرانہیں ملازمت پربحال کیاجائے اس موقع پر جسٹس سید افسرشاہ نے اپنے ریمارکس دیتے ہوئے کہاکہ ایجنسی میں جب حالات خراب تھے تو مذکورہ اہلکارملازمت چھوڑ کرچلے گئے اوراب جب وہاں امن بحال ہوگیاہے تو یہ ملازمین ملازمت کے لئے واپس آگئے ہیں جبکہ محکمے کو جب ان کی ضرورت تھی تو یہ چھوڑ کرچلے گئے تھے اس موقع پران کے وکیل نے عدالت کو بتایاکہ اسی نوعیت کے دیگرکیسزمیں برطرف ملازمین کو پشاورہائی کورٹ بحال کرچکی ہے جس پرفاضل بنچ نے ایڈیشنل چیف سیکرٹری فاٹا اورسیکرٹری ہوم کونوٹس جاری کرتے ہوئے جواب مانگ لیاہے ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...