سابق صدر ضیاء الحق کی 31 ویں برسی تقریب میں سیاسی‘ سماجی شخصیات کی شرکت

سابق صدر ضیاء الحق کی 31 ویں برسی تقریب میں سیاسی‘ سماجی شخصیات کی شرکت

  

ہارون آباد(تحصیل رپورٹر) سابق صدر مملکت جنرل ضیاء الحق شہید کی برسی عقیدت واحترام سے منائی گئی اس سلسلہ میں مسلم لیگ(بقیہ نمبر39صفحہ7پر)

ضیاء کے سر براہ وسابق وفاقی وزیر اعجاز الحق نے جناح پر یس کلب کے ممبران سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے یوم شہداء بہاولپور کو ہم نے کشمیر کے ساتھ منسوب کیا ہے اور اس امید سے کہ کشمیریوں کی جو جدو جہد آزادی ہے اس پر پاکستانی حکمران بھی وہی پالیسی اختیار کر یں گئے جو ضیاء الحق شہید کی تھی۔اس وقت ہر ذی شعور پاکستانی کو اس چیز کا حساس ہو رہا ہے کہ جنرل ضیاء الحق شہید نے روس کو افغانستان میں کیوں گھٹنے ٹیکنے پر مجبور کیا تھا اور افغانستان میں کیوں روک دیا تھا۔اس وقت اگر سکھوں کی فہر ستیں نہ دی جاتی تو آج کشمیریوں پر یہ ظلم وستم نہ ہوتا اور کشمیر میں آج پاکستان کا پرچم لہرا رہا ہوتا۔جبکہ مسلم لیگ ضیاء کے سر پرست اعلی ٰحاجی محمدیٰسین نے کہا ہے کہ اس بات میں کوئی شک نہیں ہے کہ اعجازالحق جیسا لیڈر صدیوں بعد پیدا ہوتا ہے عالم اسلام کے لئے انکی خدمات کو کبھی فراموش نہیں کیا جا سکتا اورمسلم لیگ ضیاء کے صوبائی صدر سابق ایم پی اے چوہدری غلام مرتضیٰ نے کہا کہ جنرل ضیاء الحق شہید کی اسلام ودین حق کے لئے جو خدمات تھیں وہ ناقابل فراموش ہیں کشمیر بارے انکی پالیسی بڑی واضح تھیں اگر انکو کچھ وقت اور مل جاتا تو آج کشمیر ی مسلمانوں پر جو ظلم وستم کی داستانیں رقم ہو رہی ہیں وہ کبھی نہ ہوتی اب بھی پاکستانی حکمرانوں کو چاہئے کہ وہ کشمیری مسلمانوں کی حمایت میں واضح پالیسی اپناتے ہوئے مسلہء کشمیر کے حل کے لئے عالمی فورم پر آواز بلند کرتے ہوئے بھارتی ظلم وستم وبر بریت سے کشمیری مسلمانوں کو بچانے میں اپنا کردار اداء کریں۔

برسی

مزید :

ملتان صفحہ آخر -