لاہور پولیس کے عید اور یوم آزادی پر شاندارانتظامات

لاہور پولیس کے عید اور یوم آزادی پر شاندارانتظامات
لاہور پولیس کے عید اور یوم آزادی پر شاندارانتظامات

  


پولیس کا محکمہ ملک کی اندرونی صورتحال یعنی امن و امان برقراررکھنے کے لیے حکومت کا سب سے اہم شعبہ تصور ہوتا ہے۔ ہم یوں بھی کہہسکتے ہیں کہ پولیس کا محکمہ اندرونی سرحدوں کا محافظ ہوتا ہے۔پولیس نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں بے پناہ قربانیاں دی ہیں اور پولیس کے افسر اور نوجوان اپنی جانوں کا نذرانہ مادر وطن پر نچھاور کر رہے ہیں اِس لیے پولیس کی قربانیوں کے حوالے سے کوئی دو آراء نہیں ہیں۔ پولیس کی ذمہ د اری کسی بھی معا شرے میں امن وامان قائم رکھنا ہے۔

معاشرے کے مجبور طبقات کی مدد کرنا۔باثر افراد کی چیرہ دستیوں سے مظلوم ہر بے کس افراد کو بچانا۔ پولیس در حقیقت ریاست کی طرف سے ایک ایسے کام پر مامور ہے جس طرح اللہ پاک فرشتوں کو اپنی مخلوق کی مدد کے لیے بھیجتا ہے۔ لاہور پولیس نے عیدالاضحی، 14 اگست اور یوم سیاہ کے موقع پر سکیورٹی کے فول پروف انتظامات کرکے پولیس کا مورال بلند کر دیا ہے۔ لاہور پولیس کے اچھے ٹیم ورک کا ہر سطح پر اعتراف ہونا اعزاز ہے۔

سی سی پی او لا ہور بی اے ناصر نے پولیس کے سنیئر افسروں کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے اپنی ٹیم کو شاباش دیتے ہو ئے کہا کہ تمام افسر میری طرف سے اپنے ماتحت سٹاف کو بھی شاباش دیں اور نیک خواہشات کا پیغام پہنچائیں۔ لا ہور پو لیس نے عید، 14 اگست اور یوم سیاہ پر عمدہ سکیورٹی انتظامات کیے پولیس نے نہ صرف ٹریفک کی روانی یقینی بنائی بلکہ ون ویلنگ اور ہوائی فائرنگ کے واقعات کا بھی تدارک کیا۔ بہتر انتظامات کے پیش نظر وزیراعلیٰ پنجاب اور آئی جی پولیس نے لاہور پولیس کو خصوصی طور پر شاباش دی ہے۔ سی سی پی او بی اے ناصر نے کہا ہے کہ اب ہمیں اس تعریف کا پاس رکھتے ہوئے مزید بہتر کارکردگی کا مظاہرہ کرنا ہوگا۔ لا ہو ر پو لیس کے لیے اب اگلا چیلنج محرم الحرام کے سکیورٹی انتظامات ہیں۔ سی سی پی او لا ہور نے اس عزم کا اظہار کیا ہے کہ ہر موقع پر عوام کی توقعات پر پورا اتریں گے۔ شہریوں کے ساتھ حسن سلوک پر کوئی سمجھوتہ نہیں ہوگا۔

تمام افسر خود بھی کوڈ آف کنڈکٹ پر عملدرآمد کریں اور ماتحت سٹاف کو بھی اس کا پابند بنائیں۔ انسپکٹر جنرل پنجاب پولیس کیپٹن (ر) عارف نواز خان نے بھی عید قربان اور جشن آزادی کے موقع پرلا ہورمیں مساجد، امام بارگاہوں، تفریحی مقامات اور ریلیوں کی سیکیورٹی کیلئے بہترین انتظامات یقینی بنانے پر پولیس، ٹریفک پولیس، ڈولفن فورس، سپیشل برانچ سمیت دیگر فورسز کے افسران و اہلکاروں کو شاباش دی ہے۔ فورس کے نام بھجوائے گئے وائر لیس پیغام میں آئی جی پنجاب نے کہا کہ عید الالضحیٰ، یوم آزادی اور یوم سیاہ کے موقع پر کشمیری عوام سے اظہار یکجہتی کیلئے نکالی جانے والی تمام ریلیوں اور جلوسوں کی سیکیورٹی کیلئے افسران و اہلکار وں نے جو اقدامات کیے وہ بجا طور پر قابل تعریف ہیں۔

لا ہور پو لیس نے بہترین انتظامات یقینی بنا کر ثابت کیا کہ پولیس افسران و اہلکار خدمت خلق اور جذبہ حب الوطنی سے سرشار ہیں اور عوام کی جان ومال اور عزت کے تحفظ کو اپنی عبادت سمجھتے ہیں۔ سی سی پی او لا ہوربی اے ناصر کی پوری ٹیم نے ہی ہر موقع پر یہ ثابت کیا ہے کہ وہ محنت، محبت اور خلوص نیت سے سر شار ہیں لیکن جہاں تک ڈی آئی جی آپریشن اشفاق احمد خان کے کام کر نے کی بات ہے۔ اشفاق احمد خان ایک دلیر،زہین،معاملہ فہم،دوراندیش اور سحر انگیزشخصیت کے مالک انسان ہیں۔بلا شبہ جہا ں ان کے لبو ں پر سجی دائمی خاموش مسکراہٹ نے پو لیس اور شہر یو ں کے دل جیت لیے ہیں۔

وہیں ان کے انصاف اور اعلی معیار پو لسینگ کی بدولت،چورو ں،اچکو ں،بد معا شو ں پر ہیبت طاری ہے۔

ایک پیشہ وارانہ اور محکمہ سے متعلق جدید مہارتوں کے حامل پولیس آفیسر تصور کیے جاتے ہیں۔ پولیس ڈیپارٹمنٹ کو بہتر اور موثر طریقے سے چلانے کیلئے جدت پسند خیال کئے جاتے ہیں دنیا کی وہ ریاستیں جنہوں نے امن و امان کے قیام اور قانون کی حکمرانی کو یقینی بنایا انہوں نے ہر شعبے میں ترقی کی۔ پولیس ریاست کا بنیادی ادارہ ہوتا ہے جو عوام کے تعاون سے ریاست کے امن اور اندرونی استحکام کا ضامن بنتاہے۔ڈی آئی جی اشفاق احمد خان کا کہنا ہے کہ پیسہ اورعزت دونوں میں سے سرکاری عہدے پر رہتے ہوئے ایک کا انتخاب کرنا ہوگا دونوں کا سرکاری عہدہ پر ملنا ناممکن ہے۔

قانون سب کے لیے ایک جیسا ہو نا چاہیے۔سی سی پی اوبی اے ناصراورڈی آئی جی آپریشن اشفاق احمد خان کی سب سے بڑی خوبی کہ یہ آپس میں محبت اور جزبہ سے سرشار ہوکر کام کرتے ہیں۔ان میں گروپنگ نام کی چیز نہیں ہے۔پاکستان کے تمام صوبوں کی پولیس اگر جانفشائی، خلوص نیت، محکمانہ عزت و ناموس کا تحفظ کرنے کی ٹھان لے تو ہر قسم کے جرائم ختم کر سکتی ہے۔

مزید : رائے /کالم


loading...