لاہور پولیس نے محرم الحرام کا سیکیورٹی پلان جاری کردیا 

      لاہور پولیس نے محرم الحرام کا سیکیورٹی پلان جاری کردیا 

  

لاہور(کرائم رپورٹر)ڈی آئی جی آپریشنزلاہور اشفاق خان کی زیر نگرانی گزشتہ سال کی طرح اس سال بھی محرم الحرام کے موقع پرسکیورٹی کے فول پروف انتظامات یقینی بنائے جارہے ہیں ڈی آئی جی آپریشنزاشفاق خان اس حوالے سے پولیس افسران، امن کمیٹی اور شیعہ کمیونٹی کے بیشتر اجلاس منعقد کرچکے ہیں  ڈی آئی جی آپریشنز نے سکیورٹی پلان بارے آگاہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ محرم الحرام کے دوران شہر بھرمیں سکیورٹی ہائی الرٹ رہے گی، تمام پولیس افسران مجالس ا ور جلوسوں کے حفاظتی انتظامات کا خودجائزہ لیں گے اور منتظمین مجالس و عزاداری جلوسوں کے ساتھ مسلسل رابطے میں رہیں گے اشفاق خان نے کہا کہ محرم الحرام کے موقع پر 15 ہزار سے زائد پولیس افسران و اہلکار فرائض سرانجام دینگے سکیورٹی پلان کے مطابق 12ایس پیز، 34ڈی ایس پیز، 83 انسپکٹرز تعینات ہونگے اسکے علاوہ اینٹی رائٹ فورس، سپیشل سکیورٹی یونٹ،ڈولفن سکواڈ اور پولیس رسپانس یونٹ کے اہلکار بھی ڈیوٹی کریں گے۔محرم کے دوران 10ہزار سے زائد رضا کار چیکنگ کے فرائض سر انجام دینگے محرم الحرام کے تمام پروگراموں میں ماسک، سینیٹائزرز، سماجی فاصلے سمیت کورونا ایس او پیز پرمکمل عملدرآمد یقینی بنایا جائیگا۔اشفاق خان نے کہا کہ شہر میں منعقد ہونے والی5235 مجالس اور650 جلوسوں کوحساسیت کے اعتبار سے اے، بی اور سی کیٹیگری میں تقسیم کیا گیا ہے۔ 610مجالس کو اے کیٹیگری،3471کوبی جبکہ 1154 مجالس کو سی کیٹیگری کے مطابق حساس قراردیا گیا  اسی طرح لائسنسی اور غیر لائسنسی جلوسوں میں سے 143کو اے کیٹیگری، 449کوبی جبکہ 58 جلوسوں کو سی کیٹیگری کے مطابق حساس قرار دیا گیا ہے۔

اشفاق خان نے کہا کہ محرم الحرام کے موقع پر مذہنی منافرت پر مبنی لٹریچر،متنازعہ تقاریر، وال چاکنگ اوراشتعال انگیز مواد کی تشہیر کی پابندی پر سختی سے عمل درآمد کروایا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ محرم الحرام کی آمد کے پیش نظر حساس مقامات کے گردو نواح میں سرچ اینڈ سویپ آپریشنز، سنیپ چیکنگ،جیو فینسنگ، بائیو میٹرک تصدیق سمیت تمام حفاظتی اقدامات باقاعدگی سے جاری ہیں۔تمام عزاداری جلوس اور مجالس اہمیت کی حامل ہیں جنہیں بھرپور سکیورٹی فراہم کی جائے گی۔چیکنگ کے لئے میٹل ڈیٹیکٹرزاور واک تھرو گیٹس کا استعمال بھی یقینی بنایا جائے گا۔اشفاق خان نے کہا کہ عزاداری جلوسوں کی پنجاب سیف سٹیز اتھارٹی کے سی سی ٹی وی کیمروں کے ذریعے مانیٹرنگ کی جائے گی۔امام بار گاہوں عزاداری جلوسوں کے روٹ میں آنے والی عمارتوں کی چھتوں پر مشکوک افراد پر نظر رکھنے کے لئے سنائپرز بھی تعینات ہونگے۔انہوں نے کہا کہ شہر کے 54 مختلف پوائنٹس پر شہریوں کی چیکنگ یقینی بنائی جائے گی۔جلوس اور مجالس کے شرکاء کو مکمل تلاشی کے بعد ہی مجالس و جلوسوں میں داخلے کی اجازت ہو گی۔ شہرکے داخلی وخارجی راستوں پر تمام گاڑیوں، موٹر سائیکلوں جبکہ لاری اڈوں، بس ٹرمینلزاور ریلوے سٹیشنزپرمسافروں کی چیکنگ اور شناخت یقینی بنائی جائے۔ڈی آئی جی آپریشنز لاہور اشفاق خان نے مزید کہا کہ امام بارگاہوں کے اطراف اور روٹ کے راستے میں رہائش پذیر کرایہ داروں اور گھریلو ملازمین کی تھانوں میں رجسٹریشن بھی یقینی بنائی جارہی ہے۔ سکیورٹی انتظامات یقینی بنانے کے لئے شہریوں کا تعاون نا گزیر ہے۔

مزید :

علاقائی -