لیکچرز کو ٹائم اسکیل نہ ملنے پر حکومتِ کی رپورٹ مسترد

  لیکچرز کو ٹائم اسکیل نہ ملنے پر حکومتِ کی رپورٹ مسترد

  

کراچی(این این آئی)سندھ ہائی کورٹ نے سندھ کے 9 ہزار لیکچرز اور پروفیسرز کو ٹائم اسکیل نہ ملنے کے معاملے پر حکومتِ سندھ کی رپورٹ مسترد کر دی۔عدالتِ عالیہ نے اسسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل پر اظہارِ برہمی کرتے ہوئے کہا کہ یہ وہی سمری ہے جو وزیرِ اعلی کو دی گئی، اس کا نتیجہ کیا نکلا، وہ عدالت کو بتائیں۔سندھ ہائی کورٹ کے جسٹس محمد علی مظہر نے کہا کہ سندھ حکومت نے کمیٹی بنانے کا کہا تھا اس کا کیا ہوا؟۔درخواست گزار نعیم اقبال کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ 2010 سے کیس زیرِ سماعت ہے، رواں سال 4 مارچ کو اس معاملے پر کمیٹی بھی بنی تھی۔جسٹس محمد علی مظہر نے اسسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل کو حکم دیا کہ عدالت کا وقت ضائع نہ کریں، پیش رفت رپورٹ لے کر آئیں۔اسسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل نے عدالت سے استدعا کی کہ 2 ہفتوں کی مہلت دے دیں، پیش رفت رپورٹ لے کر آوں گا۔عدالت نے آئندہ سماعت پر سیکریٹری کالجز اور ایڈیشنل سیکریٹری تعلیم کو طلب کر لیا۔عدالتِ عظمی نے کیس کی مزید سماعت 2 ستمبر تک ملتوی کر دی۔

مزید :

صفحہ آخر -