صوابی میں مختلف وارداتوں کے دوران 3افراد جا ں بحق، 4زخمی 

صوابی میں مختلف وارداتوں کے دوران 3افراد جا ں بحق، 4زخمی 

  

صوابی(بیورورپورٹ)ضلع صوابی میں مختلف واقعات میں تین افراد جاں بحق جب کہ چار زخمی ہو گئے۔ صوابی ٹوپی روڈ پر باجا بائی پاس کے مقام پر موٹر کا ر اور موٹر سائیکل کے مابین خوفناک تصادم کے نتیجے میں موٹر کار کی ٹکر سے مو ٹر سائیکل سوار عرفان اللہ ولد حبیب اللہ (مرغی فروش) جاں بحق جب کہ ان کا ساتھی شوکت زمان اور آٹھ سالہ بچہ یوسف شدید زخمی ہو گئے جنہیں صوابی اور پشاور کے ہسپتالوں کو منتقل کر دیا گیا۔ دونوں ساتھی موٹر سائیکل پر اپنے گاؤں بام خیل آرہے تھے کہ راستے میں حادثے کا شکار ہو گئے۔دریں اثناء موضع مانکی میں جے یو آئی کے بزرگ کارکن مولانا مفتی محمود اور مولانا غلام غوث ہزاروی کے دست راست سید مقدس شاہ باچا اپنے آراہٹ کے کنویں میں صفائی کے دوران زہریلی گیس سے جاں بحق ہو گئے متوفی گذشتہ روز اپنے آراہٹ کے کنویں کو صاف کرنے کے لئے اُتر گئے لیکن کنویں میں موجود گیس کی وجہ سے دم توڑ گئے جب ان کا بھائی لاش کو نکالنے کے لئے کنویں میں اُتر گئے تو ان کی حالت بھی غیر ہو گئی مرحوم کو گذشتہ رات موضع مانکی میں سپرد خاک کر دیا گیا۔مسماۃ (م)دختر رودین سکنہ دیر حال دوبیان نے تھانہ یار حسین میں ایف آئی آر درج کراتے ہوئے بتایا کہ مبینہ طور پر عزیر اور ولید نے ان کے بھائیوں پر فائرنگ شروع کر دی جس کے نتیجے میں ان کا بھائی فرمان گولی لگنے سے موقع پر جاں بحق ہو گیا جب کہ دوسرا بھائی اقبال شدید زخمی ہو گئے وجہ عناد تنازغہ رشتہ بیان کی ہے۔ پولیس نے ایف آئی آر درج کر کے تفتیش شروع کر دی ہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -