اسرائیل سے معاہدے‘ عرب امارات اپنے  فیصلے پر نظر ثانی کرے‘ سید ذیشان اختر

  اسرائیل سے معاہدے‘ عرب امارات اپنے  فیصلے پر نظر ثانی کرے‘ سید ذیشان اختر

  

بہاولپور(ڈسٹرکٹ رپورٹر)نائب امیر جماعت اسلامی جنوبی پنجاب سید ذیشان اختر نے امریکہ کے ایما پر اسرائیل(بقیہ نمبر39صفحہ6پر)

،عرب امارات کے معاہدے کو مسترد کرتے ہوئے کہاکہ عرب امارات اپنے فیصلے پر نظرثانی کرے کیونکہ مسئلہ فلسطین صرف عربوں کا نہیں بلکہ پوری امت مسلمہ کا مسئلہ ہے۔ عرب امارات نے اسرائیل سے معاہدہ کرکے پوری امت مسلمہ کے دل دکھائے ہیں، بیت المقدس امت کا قبلہ اول ہے جہاں پر اسرائیل نے ناجائز قبضہ کر رکھا ہے، امت مسلمہ کے دشمن اور ناجائز اسرائیلی ریاست کو پاک سرزمین پر کبھی بھی قبول نہیں کیا جائے گا،پاکستان سمیت پوری امت مسلمہ کے دل اپنے فلسطینی بھائیوں کے ساتھ دھڑکتے ہیں۔ انہوں نے زور دیا کہ اسرائیل۔عرب امارات معاہدے پر حکومت پاکستان اپنا موقف واضح کرے جبکہ اوآئی سی کا اجلاس طلب کرکے اس معاہدے کی مذمت کی جائے۔انہوں نے کہا کہ متحدہ عرب امارات نے اپنے چند مخصوص سیاسی مفادات کی خاطر القدس کو بیچنے اور مسلمانوں کے سب سے بڑے دشمن نیتن یاہو اور ڈونلڈ ٹرمپ کو آنے والے الیکشن میں کامیابی دلوانے کیلئے یہ گھناؤنا کردار ادا کیا ہے جس پر پوری امت سوگوار اور فلسطین میں ماتم کا ماحول ہے، عرب ممالک کو یہ حق نہیں ہے کہ وہ امت مسلمہ کے ڈیڑھ ارب سے زائد مسلمانوں کے دلوں میں بسنے والے مسجد اقصیٰ اور فلسطین کی مقدس سرزمین کا سودا کریں، فلسطین کے مظلوم مسلمانوں پر یہود کے مظالم جاری ہیں گذشتہ پانچ روز سے غزہ کی پٹی پر اسرائیلی فضائیہ کی بمباری جاری ہے لیکن عرب ممالک کے شیوخ اپنے اقتدار کو دوام دینے کیلئے فلسطینیوں کے پیٹھ میں چھرا گھونپ کر تاریخ میں بدترین کردار ادا کیا ہے، پاکستانی حکمرانوں نے عرب ممالک کی پیروی کی تو کشمیر کا ایشو ہمیشہ کیلئے دفن ہوجائیگا کیونکہ بھارت فلسطین ماڈل پر عمل کرنے کیلئے اسرائیل سے مکمل تعاون کررہا ہے، جماعت اسلامی امت کی ترجمانی کرتے ہوئے عربوں کی غداری کیخلاف شدید احتجاج جاری رکھے گی۔

ذیشان اخت

مزید :

ملتان صفحہ آخر -