مہمند،محکمہ زکواۃ کے تحت اجتماعی قربانی کی جانوروں کا خود ساختہ تقسیم یکسر مسترد 

  مہمند،محکمہ زکواۃ کے تحت اجتماعی قربانی کی جانوروں کا خود ساختہ تقسیم یکسر ...

  

 مہمند(نمائندہ پاکستان)محکمہ زکواۃ کے تحت اجتماعی قربانی کی جانوروں کا خود ساختہ تقسیم یکسر مسترد کرتے ہیں۔تقسیم کار میں علاقے کے رسم، نفع و نقصان، آبادی اور رقبہ کو نظر انداز کر رکھا ہے۔تقسیم سیاسی اور من پسند افراد میں ہوا ہے۔خود ساختہ تقسیم حکمران جماعت کی ناکامی ہے۔ جبکہ انتظامیہ کے خاموشی لمحہ فکریہ ہے۔ تحقیقات کی جائے۔کمالی حلیمزئے مشران۔تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز محکمہ زکواۃ کے تحت اجتماعی قربانی کی جانوروں کے تقسیم کار کے خلاف کمالی حلیمزئے مشران کا جرگہ غازی بیگ میں حاجی رحیم کے قیادت میں ہوا۔جرگے میں ملک سلطان، حاجی مختیار، ملک عظمت خان سمیت دیگر افراد نے شرکت کی۔جرگہ سے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے حاجی رحیم و دیگر نے کہا۔کہ گزشتہ روز محکمہ زکواۃ کے تحت 80 اجتماعی قربانی کے جانور ضلع بھر میں تقسیم ہوا ہے۔جن میں صافی قوم کو پندرہ خویزئے بائیزئے کو پندرہ، گندھاب حلیمزئے میں بیس، کمالی حلیمزئے میں دو اور لوئر سب ڈویژن کو  اٹھائیس جانور دئے گئے ہیں۔جبکہ ابادی رقبہ اور علاقے حصہ مساوات کے پیش نظر کمالی حلیمزئے کا حصّہ مکمل منافی ہے۔کیونکہ علاقے کا کل ابادی تقریباً تیس ہزار کے قریب ہے۔جن کو حصے میں دو جانور دینا مذاق کے مترادف ہے۔انہوں نے کہا کہ گزشتہ محکمہ لائیوسٹاک کے مال مویشی تقسیم میں بھی علاقے کو نظر انداز کر رکھا تھا۔اور تمام علاقے میں صرف تین یونٹ دی تھے۔مقررین نے کہا کہ علاقے کو بلدیاتی نظام میں بھی علاقے کے ابادی تناسب سے کم ویلج کونسل دی ہیں۔جن کے لئے ایک جدوجہد شروع کریں گے۔تمام شرکاء نے علاقے کے ساتھ تمام ناجائز تقسیم سختی سے مسترد کرکے بھرپور مذمت کی۔انہوں نے ڈپٹی کمشنر مہمند سے علاقے کے حصہ مساوات کے تحقیقات کے پرزور اپیل کی ہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -