وہاڑی: فلور ملز کی ہڑتال‘ انتظامیہ کو بلیک میل کرنیکی کوشش فلاپ 

وہاڑی: فلور ملز کی ہڑتال‘ انتظامیہ کو بلیک میل کرنیکی کوشش فلاپ 

  

وہاڑی + بوریوالا + ماچھیوال + بیورو رپورٹ + نامہ نگار + تحصیل رپورٹر) فلور ملز مالکان کی طرف سے بلا جواز ہڑتال سے آٹے کا بحران پیدا کرکے فوڈ انتظامیہ کو بلیک میل کرنے کی کوشش کو ضلعی انتظامیہ نے ناکام بنا دیا۔ تفصیل کے مطابق کے محکمہ فوڈ کے حکام نے گذشتہ دنوں (بقیہ نمبر29صفحہ6پر)

طاہر فلور ملز کے خلاف بے ضابطگیوں پر دو لاکھ سے زائد جرمانہ عائد کرکے پانچ دن کے لیے سبسڈی پر ملنے والی گندم کا کوٹہ پانچ دن کے لیے منسوخ کر دیا تھا. جس پر فلور ملز ایسوسی ایشن نے اپنے ساتھی کو محکمانہ کارروائی سے بچانے کیلئے فلور ملز کی ہڑتال کرکے شہر میں آٹے کا مصنوعی بحران پیدا کیا اور محکمہ فوڈ پر دباؤ ڈال کر اپنے ناجائز مطالبات منوانے کی کوشش کی جس پر ڈپٹی کمشنر وقاص رشید، اسسٹنٹ کمشنر رانا اورنگ زیب اور محکمہ فوڈ کے حکام نے فلور ملز مالکان سے مذاکرات کیے جس میں فلور ملز مالکان ہڑتال کا کوئی جواز پیش نہ کرسکے بلکہ کچھ ایمان دار اور درد دل رکھنے والے فلور ملز مالکان نے ہڑتال سے لا تعلقی ظاہر کرتے ہوئے ضلعی انتظامیہ کا ساتھ دینے کا اعلان کرتے ہوئے اپنی آٹے کی ملیں چلا دیں جبکہ چند فلور مل مالکان ہرتال پر ڈٹے رہے. ضلعی انتظامیہ نے واقعہ کی انکوائری کرائی تو بلیک میلر فلور ملز   بارے مزید انکشافات سامنے آنا شروع ہوگئے جس پر مبینہ فلور مل کے مالک نے مزید کاروائی سے بچنے کے لیے انتظامیہ کے آگ گھٹنے ٹیک دیے اور ہڑتال ختم کرنے کا اعلان کر دیا جس سے شہر میں آٹے کا  مصنوعی بحران پیدا کرکے انتظامیہ کو بلیک میل کرنے کا منصوبہ بری طرح سے ناکام ہو گیا. شہریوں نے انتظامیہ کی کاوشوں سراہتے ہوئے آٹے کی وافر مقدار میں دستیابی پر انتظامیہ کا شکریہ ادا کیا جبکہ  سرپرست اعلی فلور ملز ایسوسی ایشن حافظ عبید اللہ نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ  آٹے کی خورد برد اورقلت پیدا کرنے کا ایجنڈا رکھنے والے شیخ شہباز محمود کو عہدے سے ہٹا دیا اور ہڑتال سے لاتعلقی کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ ایسے عناصر محکمہ خوراک کے افسرون پر رشوت کے الزام لگا کر سبسڈی کا آٹا دوسرے شہروں کو سپلائی کرکے مال کمانا چاہتے ہیں ناجائز منافع خوری اب نہیں چلنے دیں یہ لوگ آٹے کی قلت پیدا کرکے وزیراعظم عمران خان کی حکومت کے خلاف نفرت پھیلانے والے عناصر کا بھرپور مقابلہ کریں گے انہوں نے کہا کہ بوریوالا کی ایک فلور ملز جوکہ سابق صدر کی ملکیت ہے اس پر گندم کا کوٹہ خردبرد کرنے پر جرمانہ عائد ہوا تھا انہوں نے مزید کہا کہ سبسڈی کی گندم کے آٹے پر صرف ضلع وہاڑی کے عوام کا حق ہے. وہ آئندہ بھی کسی غلط فلور مل مالک کا ساتھ نہیں دیں گے۔ ملک بھرکی طرح وہاڑی وگردونواح میں بھی مہنگائی کاطوفان بے قابوہوگیاہے روزمرہ کی اشیاء خوردونوش کی قیمتوں میں بے پناہ اضافہ ہوچکاہے مہنگائی کے طوفان نے شہریوں کی مشکلات میں اضافہ کردیاآٹا،دالیں،چینی،گھی،گوشت کے علاوہ سبزیوں اورپھلوں کی قیمتوں کوبھی پرلگے ہوئے ہیں اقتدارمیں آنے سے قبل موجودہ حکمرانوں نے مہنگائی پرقابوپانے کے دعوے تو بہت کئے تھے لیکن عوام کواب بھی مہنگائی کے طوفان کاسامناکرناپڑرہاہے اب تو سبزیوں اورپھلوں کے ریٹ سن کرہی عوام کارنگ ٹماٹرکی طرح  لال ہوجاتاہے آٹا،چینی،سبزیوں اورپھلوں کی قیمتیں غریب آدمی کی پہنچ سے دور ہوچکی ہیں موجودہ حکومت کے اقتدارمیں آنے سے قبل اشیائخوردنوش کی جوقیمتیں تھیں اب ان اشیائکی قیمتوں دوسوسے تین سوگناہ اضافہ ہوچکاہے یوں محسوس ہوتاہے کہ کسی بھی تاجرتنظیم یاانتظامیہ کوغریب عوام کی مشکلات کااحساس تک نہیں ہے اب غریب آدمی کیا کھائے بھنڈی 60روپے فی کلو،توری 80روپے فی کلو،ادرک 500روپیفی کلو،بینگن60روپے فی کلو،آم 150روپے تا200روپے فی کلو،دودھ70روپے تا80روپے فی کلو،دہی80روپے تا100روپے فی کلو،انڈہ120تا130روپے فی درجن،آٹااول تومل ہی نہیں رہااگرمل بھی جائے تو20کلووالاآٹاکاتھیلا860روپے کے بجائے1000روپے میں فروخت کیاجارہاہے عوام کاکہناہے اگرحکومت اقتدارمیں آنے سے سے پہلے والے ریٹ ہی برقراررکھ لیتی توعوام کواتنی پریشانی کاسامنانہ کرناپڑتااشیاء خوردونوش کی بڑھتی ہوئی قیمتوں کی وجہ سے غریب آدمی کی پہنچ سے دور ہوچکی ہیں غریب عوام مہنگائی کی چکی میں کب پسی رہی ہے غریب عوام کی اعلی احکام سے معصومانہ اپیل ہے کہ مہنگائی کے اس طوفان کا سامنے بندباندھاجائے تاکہ غریب لوگ اپنے بچوں کودووقت کی روٹی توآسانی سے کھلاسکیں۔ جبکہ ماچھیوال اور گردونواح میں آٹا نایاب ہوگیا اگر کہیں مل رہا ہے تو وہ ناقص اور غیر معیاری ہے عوام آٹے کے حصول کیلئے دربدر ٹھوکریں کھانے پرمجبور آٹے کی قلت سے عام آدمی اور مزدور طبقہ کی مشکلات بڑھنے لگی جبکہ آٹا چکی مالکان نے اس موقع کو غنیمت جانتے ہوئے آٹا فی من ریٹ 2200 روپے مقرر کردیئے مجبور عوام مہنگے داموں آٹا خریدنے پر مجبور ہیں شہریوں نے جن محمد اویس، عطااللہ، عالم شیر، طالب حسین، افضل جٹ، اکبرعلی، محمدد علی ودیگر نے ڈپٹی کمشنر وہاڑی وقاص رشید سے مطالبہ کیا کہ آٹے کی ترسیل کو یقینی بنا کر عوام کی مشکلات کا ازالہ کریں۔ مسلم لیگی ایم پی اے میاں ثاقب خوشیدنے کہاہے کہ وزیراعظم عمران کی حکومت غریب دشمن اورغریب مارحکومت ثابت ہوئی ہے آٹاکے بحران نے سراٹھاناشروع کردیاہے جبکہ چینی سمیت دیگراشیائخوردونوش کی قیمتوں مسلسل اضافہ جاری ہے لیکن وزراء اورحکومتی جماعت سے تعلق رکھنے والوں کواب بھی ملک میں دودھ اورشہدکی نہریں بہتی دکھائی دے رہی ہیں نیب عدالت کے باہرمریم نوازشریف پربزدلانہ قاتلانہ حملہ سے حکومت کی بوکھلاہٹ کھل کرسامنے آگئی ہے وہ گزشتہ روزصحافیوں اوراہل علاقہ سے گفتگوکررہے تھے اس موقع پرچوہدری سعیداحمد،چوہدری محمدآصف،ملک اقبال بھارہ،راؤمحمداسحاق خان،چوہدری صفدرگجر،چوہدری حبیب احمدودیگربھی موجودتھے میاں ثاقب خورشیدکاکہناتھاکہ موجودہ حکومت کودوسال ہوچکے ہیں پہلے دن سے لیکراس وقت تک پاکستانی عوام نے سکون اورسکھ کاسانس نہیں لیابحران دربحران میں عوام کامقدربنتاجارہاہے اس وقت آٹاکااتنابحران پیداہوچکاہے جس کی وجہ سے دہاڑی دارمزدورطبقہ دووقت کی روٹی سے محروم ہوتاجارہاہے اگرصورتحال یہی رہی تواکتوبراورنومبرکے مہینوں میں آٹاکی جوقلت سامنے آئے گی اس نے سفیدپوش طبقہ کوبھی خون کے آنسورلادینے ہیں حکومت کے پاس کوئی بھی پالیسی نہیں ڈنگ ٹپاؤپالیسی اختیارکررکھی ہے ان کاکہناتھاکہ چینی اورآٹا پروزیراعظم کے بیانات سے ایسامحسوس ہورہاتھاکہ بحران کے ذمہ داروں کے خلاف کاروائی کرکے عبرت کانشان بنادیں گے لیکن اب واضح ہوچکاہے کہ حکومت چینی اورآٹاچوروں کاتحفظ کررہی ہے حکومت آئے روز ناکامی کی طرف جارہی ہے لیکن پارلیمنٹ میں وزراء کی تقریریں سن کرایسے لگتاہے کہ حکومت نے عوام کیلئے دودھ کی نہریں جاری کردی ہیں ان کاکہناتھامسلم لیگ ن کی حکومت میں عوام خوشحال تھی کاروباری طبقہ پرسکون تھالیکن موجودہ حکومت نے ٹیکسوں کی بھی بھرمارکردی ہے اوربیرونی قرضے بھی بے تحاشہ لئے ہیں لیکن اس کے باوجودملکی معیشت کابیڑہ غرق ہوچکاہے اس وقت پی ٹی آئی کوووٹ دینے والے بھی پچھتاواکاشکارہیں اوروہ اس وقت کوکوس رہے ہیں۔

کوشش

مزید :

ملتان صفحہ آخر -