سول سیکرٹریٹ: حکومت صوبے کا مقدمہ خراب کررہی ہے‘ سرائیکی رہنما 

        سول سیکرٹریٹ: حکومت صوبے کا مقدمہ خراب کررہی ہے‘ سرائیکی رہنما 

  

  ملتان (سٹی ر پورٹر) سرائیکی جماعتوں کی طرف سے ”صوبہ سرائیکستان صوبائی دارالحکومت ملتان“ کے حق میں احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔ مظاہرے سے سرائیکی رہنماؤں ملک اللہ نواز وینس، ظہور دھریجہ، مہر مظہر کات، شریف خان لشاری، رانا عمران نون، روبینہ بخاری (بقیہ نمبر32صفحہ6پر)

، عالمی شہرت یافتہ الغوزہ نواز حاجی غلام فرید کنیرہ، معروف سنگر ثوبیہ ملک، رانا عمران نون،وکلاء میں سے ساجد ایزدی سنپال ایڈووکیٹ، شاہد خان بلوچ ایڈووکیٹ، سردار قاسم تھہیم ایڈووکیٹ، مہر جواد ترگڑ ایڈووکیٹ، رضوان قلندری،زبیر دھریجہ، حاجی عید احمد،ارشد دلنور پوری، ملک یعقوب وینس، رضوان بھٹی، جاوید شانی اور دوسرے موجود تھے۔ اس موقع پر زبردست نعرے بازی کی گئی ”سول سیکرٹریٹ نا منظور“، ”تخت لہور تخت پشور ڈوہیں چور“، ”سول سیکرٹریٹ نہیں صوبہ چاہئے“، ”تیری شان میری شان سرائیکستان سرائیکستان“،”ٹانک تا پاکپتن، سرائیکی وطن سرائیکی وطن“، ”بہاولپور نہ ملتان صوبہ صرف سرائیکستان“، ”جنوبی پنجاب نا منظور“کے نعرے لگائے گئے۔ اس موقع پر سرائیکی رہنماؤں نے کہا کہ کہا کہ وسیب میں تفریق پیدا کرنے والے سول سیکرٹریٹ کے سازشی منصوبے کو مسترد کرتے ہیں۔ وسیب 16 اضلاع نہیں 23 اضلاع پر مشتمل ہے۔ انہوں نے کہا کہ بہاولپور بھی ہمارا اپنا ہے مگر میرٹ پر دارالحکومت ملتان کا حق بنتا ہے کہ ہم نے ٹانک، ڈی آئی خان، میانوالی، بھکر اور جھنگ سمیت پورے وسیب کو ساتھ لیکر چلنا ہے۔ سرائیکی رہنماؤں نے کہا کہ  سیکرٹریٹ کا دائرہ اختیار 16 اضلاع تک محدود ہوگا۔یہ 16اضلاع کونسے ہیں، اس بارے کچھ نہیں بتایا گیا۔حکومت سول سیکرٹریٹ کے نام پر صوبے کا مقدمہ خراب کرنا چاہتی ہے اور وسیب کے خلاف لڑاؤ اور حکومت کرو جیسے استعماری حربے استعمال کئے جا رہے ہیں، جن کے خلاف ہم احتجاج کریں گے، دھرنے دیں گے اور لانگ مارچ کریں گے۔انہوں نے کہا کہ سول سیکرٹریٹ نہیں صوبہ چاہئے۔ سول سیکرٹریٹ صوبے کا متبادل نہیں، ہم واضح کرنا چاہتے ہیں کہ سول سیکرٹریٹ کا نہیں صوبے کا وعدہ ہوا تھا۔ تحریک انصاف کی طرف سے الیکشن کمپین سول سیکرٹریٹ نہیں بلکہ صوبے کے نام پر چلائی گئی تھی اور صوبہ محاذ کا عمران خان سے تحریری معاہدہ صوبے کا تھا نہ کہ سول سیکرٹریٹ کا۔ انہوں نے کہا کہ سول سیکرٹریٹ ایسے ہے جیسے بچے کو کھیلنے کیلئے کھلونا دے دیا جائے۔سرائیکی رہنماؤں نے کہا کہ وسیب کی مکمل حدود اور شناخت کے مطابق صوبہ بنایا جائے، سول سیکرٹریٹ کے لولی پاپ کو مسترد کرتے ہیں۔ سرائیکی رہنماؤں نے کہا کہ حکومت وسیب کے کروڑوں افراد سے مذاق بند کرے، ملتان بہاولپور کی تقسیم قبول نہیں، ہم وسیب کی یکجہتی کی بات کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم خیرات نہیں اپنا حق مانگتے ہیں۔

سرائیکی رہنما

مزید :

ملتان صفحہ آخر -