توشہ خانہ ریفرنس، عدالت کا نواز، زرداری کی گاڑیاں منجمد کرنے کا حکم 

    توشہ خانہ ریفرنس، عدالت کا نواز، زرداری کی گاڑیاں منجمد کرنے کا حکم 

  

 اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) احتساب عدالت نے توشہ خانہ ریفرنس میں سابق صدر آصف زرداری اور سابق وزیراعظم نواز شریف کی گاڑیاں منجمد کرنے کا حکم دیدیا ہے۔عدالت نے سابق صدر کی دو بی ایم ڈبلیو اور لیکسز گاڑیاں منجمد کرنے کے حوالے سے نیب کے فیصلے کی توثیق کر دی ہے جبکہ منجمد کی گئی گاڑیوں میں نواز شریف کی مرسیڈیز بھی شامل ہے۔ توشہ خانہ سے تحفے میں ملنے والی گاڑیاں لینے پر دائر کرپشن ریفرنس میں احتساب عدالت نے آصف زرداری اور نواز شریف کی گاڑیاں منجمد کرنے کا حکم دیدیا ہے۔احتساب عدالت کے جج سید اصغر علی نے چاروں گاڑیاں منجمد کرنے کا حکم دیا۔دوسری جانب نیب راولپنڈی نے احتساب عدالت میں پارک لین کا ضمنی ریفرنس دائرکردیا جس میں آصف زرداری سمیت 19 ملزمان کے نام شامل کئے گئے ہیں۔ ضمنی ریفرنس میں کرپشن کی رقم اوروعدہ معاف گواہوں کی تعداد بڑھ گئی۔ ضمنی ریفرنس میں کرپشن کی رقم 1.5 ارب سے بڑھ کر3.74 ارب جبکہ وعدہ معاف گواہان کی تعداد بھی بڑھ گئی ہے۔ ریفرنس کے مطابق آصف زرداری اور بلاول بھٹو پارک لین میں 25،25 فیصد کے شراکت دارہیں، آصف زرداری اور بلاول بھٹو نیب کے سامنے شراکت داری کا اعتراف کر چکے ہیں، اقبال میمن اور یونس قدوائی بھی پارک لین میں شئیرہولڈرتھے۔ گواہوں نے بیان میں بتایا کہ تمام معاملات پارک لین کی انتظامیہ کے کہنے پر کرتے رہے۔ ایڈیشنل رجسٹرار ایس ای سی پی کے افسران نے پارک لین کے معاہدوں، جعلی دستاویزات میں مدد کی، جعلی دستاویزات پرپارک لین کمپنی نے قرض لیا اورپھرقرضہ واپس کرنے سے انکارکردیا۔احتساب عدالت نے پارک لین ریفرنس میں آصف علی زرداری سمیت دیگر ملزمان پر 10 اگست کو فرد جرم عائد کی تھی، عدالت نے نیب نے گواہان یکم ستمبر کو طلب کر رکھے ہیں۔

 گاڑیاں منجمد

مزید :

صفحہ اول -