15 سالہ لڑکی کے پیٹ میں 20 کلوگرام وزنی رسولی، آپریشن کرکے نکال لی گئی

15 سالہ لڑکی کے پیٹ میں 20 کلوگرام وزنی رسولی، آپریشن کرکے نکال لی گئی
15 سالہ لڑکی کے پیٹ میں 20 کلوگرام وزنی رسولی، آپریشن کرکے نکال لی گئی

  

ڈیرہ اسماعیل خان (ویب ڈیسک) ڈیرہ اسماعیل خان میں 15 برس کی بچی کے پیٹ سے 20 کلو گرام کی رسولی کو آپریشن کے ذریعے کامیابی سے نکال لیا گیا۔سرینا کی عمر 15 سال ہے لیکن اس کے پیٹ میں غیر معمولی طور پر کئی سالوں سے رسولی بھی پل رہی تھی جو 20 کلو گرام تک بڑھ گئی تھی اور رسولی نے نوجوان لڑکی کی زندگی اجیرن کر رکھی تھی۔

جیو نیوز کے مطابق سرینا کا والد گاؤں کے لوگوں کے ہاتھوں  الزامات سے تنگ آکر اسے ڈی ایچ کیو ٹیچنگ ہسپتال ڈی آئی خان لے آیا لیکن اربوں روپے کے فنڈز ، سمارٹ کارڈ کی سہولت اور ماہر ڈاکٹروں کی موجودگی کے باوجود سرینا بی بی ہسپتال انتظامیہ کی توجہ تک حاصل نہ کر سکی۔والد بیچارہ مرتا کیا نہ کرتا، آدھ موئی بیٹی کی چند سانسیں بچاکر مجبوراً پرائیویٹ ہسپتال لے آیا جہاں ننھی سی جان کو اتنے بڑے پیٹ کے ساتھ دیکھ کر سٹاف حیران اور ششدر رہ گیا۔

نجی ہسپتال میں ڈاکٹروں کی مسیحائی فوراً جاگ گئی اور ایم آر آئی ٹیسٹ سمیت دیگر مراحل کو مکمل کر کے چند گھنٹوں میں لڑکی کے پیٹ سے 20 کلو وزنی رسولی نکال کر باہر کر دی گئی۔سرینا کے والد نے بتایا کے ڈی ایچ کیو ایم ٹی ای ٹیچنگ ہسپتال میں ہمیں صرف ایک بستر کی سہولت حاصل رہی لیکن 3 دن تک مرض کی تشخیص کے مراحل تک پورے نہ کیے جا سکے۔

اس بارے جب ڈائریکٹر ڈی ایچ کیو ہسپتال ڈاکٹر فرخ جمیل سے رابطہ کیا تو وہ ایسی کسی مریضہ کی موجودگی سے ہی لاعلم تھے تاہم بعدازاں انہوں نے معلومات حاصل کرکے واقعے کی انکوائری کی یقین دہانی کرائی۔سرینا کی جان تو بچ گئی مگر ہمارے دیہی علاقوں میں کتنے مریض ایسے ہوتے ہیں جو علاج معالجہ سے اس بنیاد پر محروم رہتے ہیں کہ انہیں علاقے کا عطائی ڈاکٹر منع کرتا ہے کہ آپ کسی بھی بڑے ہسپتال میں ڈاکٹر کے پاس نہ جائیں کیونکہ آپریشن سے آپ کی جان چلی جائے گی، وہ علاج معالجہ سے محروم رہ جاتے ہیں اور جہان فانی سے کوچ کر جاتے ہیں۔

مزید :

علاقائی -خیبرپختون خواہ -ڈیرہ اسماعیل خان -