ٹیکسٹائل سیکٹر کو 8 گھنٹے گیس بحالی کا فیصلہ خوش آئندہے: سہیل بن رشید

ٹیکسٹائل سیکٹر کو 8 گھنٹے گیس بحالی کا فیصلہ خوش آئندہے: سہیل بن رشید

  

فیصل آباد (بیورورپورٹ) صدر ایوان صنعت و تجارت فیصل آباد انجینئر سہیل بن رشید نے پاکستانی مصنوعات کی یورپ یونین میں ڈیوٹی فری برآمدات کے فیصلے کے بعد وزیر اعظم پاکستان میاں محمد نواز شریف کی ہدایت پر پنجاب کے ٹیکسٹائل سیکٹر کو روزانہ تقریباً 8 گھنٹے گیس بحالی کے فیصلے کو سراہتے ہوئے اسے خوش آئند قرار دیا ہے۔ انہوں نے وزیر اعظم پاکستان میاں محمد نواز شریف ، وزیر اعلیٰ پنجاب میاں محمد شہباز شریف ،وفاقی وزیر پٹرولیم شاہد خاقان عباسی، وفاقی وزیر تجارت انجینئر خرم دستگیر خان اوروفاقی وزیر خزانہ اسحق ڈار کو فیصل آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری اوراس کی الائیڈ ایسوسی ایشنزکے پر زور مطالبے اور انتھک محنت کے بعد گیس بحالی پر شکریہ ادا کیا اور کہا کہ اس اقدام سے حکومت پر صنعتکاروں کا اعتماد بڑھے گا اور جی ایس پی کے تناظر میں غیر ملکی خصوصی طور پر یورپی خریداروں کا بھی پاکستانی برآمدکنندگان پر اعتماد میں اضافہ ہوگا۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس ضمن میں فیصل آباد چیمبرآف کامرس اور الائیڈ ایسوسی ایشنز نے گیس بندش کے معاملے کو ہر فورم پر اٹھایا اور حکومت پر زور دیا کہ یورپی یونین سے جی ایس پی پلس درجہ ملنے کے بعد اگر ٹیکسٹائل سیکٹر کو گیس نہیں ملتی تو اس کا کوئیفائدہ نہیں ہوگا۔ انہوں نے حکومت سے اپیل کی کہ ٹیکسٹائل سیکٹر کو گیس فراہمی کا سلسلہ مسلسل جاری رکھا جائے اور مستقبل میں بھی اسے روکا نہ جائے تا کہ جنوری 2014 سے یورپی منڈیوں میں پاکستانی مصنوعات کے ڈیوٹی فری پیکیج سے زیادہ سے زیادہ استفادہ حاصل کیا جا سکے۔

 صدر چیمبر انجینئر سہیل بن رشید نے کہا کہ گیس بندش کے فیصلے کے بعدفیصل آباد چیمبر نے تمام ایسوسی ایشنز کو اعتماد میں لے کر مشترکہ پریس کانفرنس کی جبکہ آل پاکستان چیمبرز آف کامرس کے بھوربن میں منعقدہ سمٹ میں بھی میںنے میڈیا اور وفاقی وزیر احسن اقبال کے سامنے گیس بندش کے نقصانات اور اس مس¿لے کو بھرپور طریقے سے اجاگر کیا۔ مزید برآں فیصل آباد چیمبر کے زیر سایہ تمام ایسوسی ایشنز نے گیس بحالی کیلئے انفرادی طور پر بھی اپنا کردار ادا کیا اور آج حکومت نے ہماری درخواست پر گیس فراہمی کا اچھا اقدام اٹھایا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس رعائتی پیکیج سے ملک میں ایک لاکھ روزگار کے نئے مواقع میسر آسکیں گے جبکہ برآمدات میں بھی 2 بلین ڈالر تک اضافہ ہوگا جو خراب پاکستانی معیشت کیلئے بلا شعبہ ایک نیک شگون ثابت ہوگا۔

مزید :

کامرس -