قومی احتساب بیورو (NAB) کی عالمی انسداد بدعنوانی کے موقع پر عملی کاوشیں

قومی احتساب بیورو (NAB) کی عالمی انسداد بدعنوانی کے موقع پر عملی کاوشیں
قومی احتساب بیورو (NAB) کی عالمی انسداد بدعنوانی کے موقع پر عملی کاوشیں

  

تحریر : بشریٰ خان

قومی احتساب بیورو کے موجودہ چئیرمین قمر زمان چوہدری نے اپنے عہدے کا چارج سنبھالتے ہی قومی احتساب بیوروکی کارکردگی کو مزید بہتربنانے کے لئے جہا ں اور بہت سے اہم اقدامات کئے ہیں وہاں انھوں نے امسال عالمی انسداد بدعنوانی کے دن 9 دسمبر2015 کو بھی بھر پور طریقے سے منانے کے لئے پہلی دفعہ یکم دسمبر سے 13 دسمبر 2015 تک انسداد بدعنوانی کے سلسلے میں مختلف سرگرمیوں کے انعقاد کی ۔ اس دوران قومی احتساب بیورو کے جہاں علاقائی احتسا ب بیورو ز کو متحرک کیاگیا تا کہ وہ اپنے اپنے بیوروز سے متعلقہ شہروں میں عوام کو کرپشن کی لعنت اور اس کے قومی ترقی اور معیشت پر مضر اثرات کے بارے میں آگاہی فراہم کرنے کے لئے سیمینار، کالجوں اور یونیورسٹیوں میں طلباء کے درمیان تقریری مقابلے، پینٹنگ کے مقابلے، تصاویر کی نمائش منعقد کروائیں۔ اس کے علاوہ قومی احتساب بیورو کے چئیرمین قمر زمان چوہدری کی ہدایت پر نیب کی ایک سال کی کارکردگی کے بارے میں تفصیلی رپورٹ تیا ر کی گئی ۔ جس کو قومی اور بین الااقوامی زرائع ابلاغ نے نمایاں طور پر نشرا ور شائع کیا۔ قومی احتساب بیورو نے کرپشن کے خاتمہ کے لئے ایک تھیم سونگ '' ''Say No To Corruption بنایا جس کو مختلف ٹی وی چینلز نے مفاد عام کے پیغام کے طور پر نشر کیا جس کے بول یہ ہیں۔

ہم سب کا ہے یہ ہے پیمان

کوئی نہ ہوگا بدعنوان

آنے والی نسلوں کو دیں گے اک نیا جہان

Say No To Corruption

میرٹ چکنا چورنہ ہوگا

جیت ہو گی تو سچ کی ہوگی

جھوٹ ہم کو منظورنہ ہوگا

آنے والی نسلوں کو دیں گے اک نیا جہان

Say No To Corruption

بھتہ پرچی رشوت چائے پانی

ؓ ؒ بالکل نہ ہوگی یہ من مانی

محنت سے ہے یہ دھرتی سجانی

بات ہے یہ جواب سب نے جانی

آنے والی نسلوں کو دیں گے اک نیا جہان

Say No To Corruption

بدعنوانی کو ختم کریں گے

اپنا سسٹم شفاف کریں گے

خواب قائدکا پورا کریں گے

آنے والی نسلوں کو دیں گے اک نیا جہان

Say No To Corruption

قومی احتساب بیورو (NAB ) کے قیام کا بنیادی مقصد بھی یہی تھا کہ ملک سے بدعنوانی کے خاتمہ کے لئے نہ صرف اقدامات کےئے جائیں بلکہ بدعنوان عناصر سے لوٹی ہوئی رقم برآمد کرکے قومی خزانے میں جمع کروائی جائے اور ان کو قانون کے کٹہرے میں کھڑا کیا جائے جہاں ان کو قانون کے مطابق سزا دی جاسکے ۔ معاشرے کو بدعنوانی سے پاک کرنے کے لیے قومی احتساب بیورو نے چےئرمین قمر زمان چوہدری کی سربراہی میں نے ایک جامع حکمت عملی اپنائی جس کو نیشنل اینٹی کرپشن سٹریجی کے طور پر بد عنوانی کے خلاف موئثر ترین حکمت عملی کے طور پر تسلیم کیا گیا ہے قومی احتساب بیورو کی بدعنوانی کے خاتمے کے لئیکی جانے والی عملی کاوشوں کا بنیادی مقصد یہ ہے کہ تمام افراد اور ادارے عوام کی کسی لالچ اور رشوت کے بغیر بلا تفریق خدمت کریں۔ قومی حتساب بیورو کے چیئرمین قمر زمان چوہدری نے اپنے عہدے کا چارج سنبھالتے ہی قومی احتساب بیورو میں جہاں بہت سی نئی اصلاحات اور تبدیلیاں کیں وہاں انہوں نے قومی احتساب بیورو کا دائرہ کار ملک کے کونے کونے تک پھیلانے کا عزم کیا ۔ قومی احتساب بیورو کا صدر مقام اسلاآبادجبکہ اس کے 5 علاقائی دفاتر پہلے سے کراچی ، لاہور ، کوئٹہ ، اور پشاور میں کام کررہے تھے۔ قومی احتساب بیورو کے چئیرمین نے دو نئے علاقائی دفاتر سکھر اور ملتان میں کھولے جس کو سکھر اور ملتان کیام نے بے حد سراہا کیونکہ اس سے پہلے بدعنوانی سے متعلقہ شکایا ت کے لئے سکھر کے لوگوں کو کراچی اورملتان کے لوگوں کو لاہور جانا پڑتا تھا۔

قومی احتساب بیورو کے چےئرمین قمر زمان چوہدری نے اپنے عہدے کا چارج سنبھالتے ہی قومی احتساب بیورو کے نیب افسران کی کارکردگی کا جائزہ لینے اور اسے مزید بہتر بنانے کیلئے جامع معیاری گریڈنگ سسٹم شروع کیا اس نظام کے تحت انھوں نے نیب کے تمام علاقائی بیورو کی کارکردگی کا جائزہ لیا ۔ اس نظام کے تحت تمام شکایات پر پہلے دن سے ہی unique identification number لگانے کی ہدایت نہ صرف کی بلکہ انکوائریوں، انوسٹی گیشن، احتساب عدالتوں میں ریفرنس، ایگزیکٹو بورڈ، ریجنل بورڈز کی تفصیل ، وقت اور تاریخ کے حساب سے ریکارڈ رکھنے کے علاوہ موثر مانیٹرنگ اینڈ اولیویشن سسٹم کے ذریعہ اعدادوشمار کا معیاراور مقدار کا تجزیہ بھی کیا جا رہا ہے ۔ نیب نے شکایات کوجلد نمٹانے کیلئے انفراسٹرکچراورکام کرنے کے طریقہ کار میں جہاں بہتری لائی وہاں شکایات کی تصدیق سے انکوائری اور انکوائری سے لے کر انویسٹی گیشن اوراحتساب عدا لت میں قانون کے مطابق ریفرنس دائر کرنے کے لئے ((10 دس ماہ کا عرصہ مقرر کیا اسکے علاوہ چیئرمین نیب قمرزمان چوہدری کی ہدایت پر قومی احتساب بیورو نے اپنے ہر علاقائی دفتر میں ایک شکایت سیل بھی قائم کیا گیا ۔ نیب نے انویسٹی گیشن آفیسرز کے کام کرنے کے طریقہ کار کا ازسرنو جائزہ لیا ۔ سینئر سپروائزری افسران کے تجربے اور اجتماعی دانش سے فائدہ اٹھاتے ہوئے ڈائریکٹر، ایڈیشنل ڈائریکٹر، انویسٹی گیشن آفیسرز اور سینئر لیگل کونسل پر مشتمل سی آئی ٹی(CIT) کا نظام قائم کیا جس سے نہ صرف کام کا معیار بہتر ہوگا بلکہ کوئی بھی شخص انفرادی طور پر تحقیقات پر اثرا انداز نہیں ہوسکے گا۔ چیئرمین نیب قمرزمان چوہدری نے ادارے کے اندر بھی احتساب کا عمل شروع کیا اس عمل کے تحت نالائق، بد دیانت اور غفلت برتنے والوں کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی کا فیصلہ کیا گیا۔ نیب کے ہیڈکوارٹر میں ایک اینٹیگریٹی منیجمنٹ سیل قائم کیا گیا ہے مذید براں نیب کے افسران، پراسیکیوٹر اور فیلڈ افسران کی کارکردگی کا موثر جائزہ لینے کیلئے مانیٹرنگ اینڈ ایلویشن سسٹم قائم کیا گیا ہے جو کہ موجودہ کاغذ پر اعتماد کے نظام اور زیادہ وقت لینے والے رپورٹنگ سسٹم کا متبادل ثابت ہوگا اور سرکاری کام میں کارکردگی اورمعیار میں اضافہ ہوگا۔

قومی احتساب بیورو نے اپنے نئے بھرتی ہونے والے تفتیشی افسرا ن کو جدید خطوط پرپولیس کالج سہالہ میں ٹرینگ دی جا رہی ہے کرپشن اور وائٹ کالر جرائم جسے جرائم سے متعلق جدید ٹیکنالوجی کو استعمال کرتے ہوئے تحقیقات کے بارے میںآگاہی فراہم کی جارہی ہے یہی وجہ ہے کہ قومی احتساب بیور و کا مجموعی طور پر 1999 سے اب تک Conviction Rate تقریباََ75 فیصد ہے۔

قومی احتساب بیورو نے ہائر ایجوکیشن کمیشن کے ساتھ ملکر یونیورسٹیوں کے طلباء کے درمیان تقریری مقابلے کروائے اور طلباء کو بدعنوانی کے ملکی ترقی پر مضر اثرات سے آگاہی فراہم کی کیونکہ کرپشن ایک لعنت ہے اور اس کے خاتمے کے لئے پوری قوم خصوصاََ نوجوانوں کو کلیدی کردار ادا کرنا چائیے۔ قومی احتساب بیورو کی سب سے بڑی خصوصی تقریب ایوان صدر میں عالمی انسداد بدعنوانی کے موقع پر صدرِ مملکت جناب ممنون حسین کی صدارت میں منعقد ہوئی۔ جس میں مختلف ملکوں کے سفارتکاروں کے علاوہ زندگی کے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والے خواتین وحضرات نے شرکت کی۔تقریب سے صدر مملکت جناب ممنون حسین کے علاو و فاقی وزیر برائے قانون جناب سینیٹر پرویز رشید، چےئرمین نیب قمر زمان چوہدری ، پلڈات کے صدر احمد بلال محبوب ا ور ایشین ڈیولپمنٹ بنک اور UNODC کے نما ئندوں نے خطاب کیا۔ صدرِ مملکت جناب ممنون حسین اورو فاقی وزیر برائے قانون جناب سینیٹر پرویز رشیدنے ملک سے کرپشن کے خاتمہ کے لئے قومی احتساب بیورو خصوصاََ چےئرمین نیب قمر زمان چوہدری کی کوششوں کو سراہا ۔ یہ امر قابل ذکر ہے کہ گزشتہ 20 سالوں میں پاکستان کرپشن کی کم ترین سطح 175 سے 126 نمبر پر پہنچ گیا ہے جو کہ نیب کی کاوشوں کا نتیجہ ہے۔ پلڈاٹ کے صدر احمد بلال محبوب نے کہا کہ پلڈاٹ کی رپورٹ کے مطابق 42 فیصد لوگوں نے قومی احتساب بیورو پر اعتماد کا اظہارکیا ہے۔ قومی احتساب بیورو کے چےئرمین قمرزمان چوہدری نے کہا کہ ہماری کوششوں اور انتھک کاوشوں کی بدولت عوام کا نیب پر اعتماد میں اضافہ ہواہے۔ انہوں نے کہ کہ قومی احتساب بیورو نے اپنے قیام سے اب تک 265 ارب روپے بدعنوان عناصر سے ریکور کرکے قومی خزانے میں جمع کروائے ہے جو کہ ایک ریکارڈ کامیابی ہے۔

امسال قومی احتساب بیورونے پورے ملک میں عوام کو کرپشن کے مضر اثرات سے آگاہی کے لئے بھر پو مہم چلائی جس کے بڑے دور رس نتائج برامد ہوں گے۔ قومی احتساب بیورو کے چےئرمین قمرزمان چوہدری انتہائی اصول پسند، انصاف پسند، ایماندار اور اعلیٰ شہرت کے حامل شحص ہیں۔ جن کو حکومت اور اپوزیشن نے متفقہ طور پر چےئرمین نیب کے عہدے پر تعینات کیا تھا۔ اپنی تعیناتی کے بعد چےئرمین نیب نے مثالی کارکردگی سے ثابت کیا کہ وہ عہدے کے لئے نہایت موزوں شخصیت ہیں۔ مجھے یاد ہے کہ قومی احتساب بیورو نے راولپنڈی احتساب بیورو میں ایک تقریب منعقد کی جس کی صدارت وفاقی وزیر برائے بین الصوبائی رابطہ ریاض حسین پیرزادہ نے کی۔ تقریب میں انہوں نے قومی احتساب بیورو کی کاوشوں کی بدولت محتلف ہاؤسنگ سوسائٹیزکی طرف سے عوام سے لوٹی ہوئی رقوم اصل متاثرین کو واپس کئے تو متاثرین نے قومی احتساب بیورو کے چےئرمین قمرزمان چوہدری کے لئے بہت دعائیں کیں اور کہا کہ ان کی داوشوں کی بدولت نیب نے ان کی زندگی بھر کی جمع پونجی واپس دلائی۔ اس موقع پر قفاقی وزیر رایض پیرزادہ نے کہ کہ نیب کے موجودہ چےئرمین قمر زمان چوہدری نے ان کے ساتھ دو سا ل کام کیا ہے میں ان کو داتی طور پر جانتا ہوں آپ انتہائی ایماندار قابل اور ذہین افسر ہیں ۔ ان کی صلاحیتوں کو دیکھتے ہوئے میر ی دعا تھی کہ اللہ تعالیٰ ان کو چےئرمین نیب تعینات کرے اللہ تعالیٰ نے ان کو چےئرمین نیب بنایا ہے۔ انہوں نے محتصروقت میں جوبے مثال کار کردگی دکھائی ہے وہ قابل رشک ہے۔

قومی احتساب بیورو نے ملک بھر کے تمام سنیما گھروں میں قومی ترانہ کے بعد Say No to Corruption پر مبنی ویڈیو پیغامات نشرکرنے شروع کر دیے ہیں۔ مزید بران پورے ملک میں تمام کیبل اپریٹرز نے اپنے اپنے کیبل چینلز پر قومی احتساب بیورو کے پیغامات جن پر کرپشن ایک لغنت ہے، رشوت سے اجتناب کریں ۔کرپشن ملک کی ترقی اور معیشت کے لئے زہر ہے چلائے جن کے ذریعے عوام کو کرپشن کے مضر اثرات سے آگاہی حا صل ہوئی ۔ قومی احتساب بیورو نے تمام موبائل فونز کمپنیوں پر عالمی انسداد بد عنوانی کے دن Say No to Corruption کے حوالے سے پیغامات کروڑوں لوگوں تک پہنچائے اس کے علاوہ عالمی انسداد بدعنوانی کے دن ملک کے بڑے بڑے اخبارات نے خصوصی سپلیمنٹ شائع کئے جن پر صدر پاکستان ممنون حسین سیکرٹری جنرل اقوام متحدہ بانکی مون اور چےئرمین نیب قمر زمان چوہدری کے پیغامات شائع کئے گئے۔قومی احتساب بیورو نے چئیرمین نیب قمر زمان چوہدری کی ذاتی کاوشوں کی بدولت اس سال صیح معنوں میں عالمی انسداد بدعنوانی کا دن ملک بھر میں اس عہد کے ساتھ منایا گیا کہ بد عنوا نی ا یک لعنت ہے جو تمام مسائل کی جڑ ہے۔ اور اس کے ملک کی ترقی اور معیشت پر اثرات کے متعلق آگاہی فراہم کی گئی کیونکہ قومی احتساب بیورو (نیب) اپنے موجودہ چےئرمین قمرزمان چوہدری کی قیادت میں پاکستان سے کر پشن کے خاتمہ کے لئے پر عزم ہے۔ اور نیب کے افسران کسی دباؤ اور پریشر کے بغیر میرٹ اور شواہد کی بنیاد پر بلاتفریق بدعنوان عناصر کے خلاف اپنی کاوشیں جاری رکھیں گے۔

مزید :

کالم -