سی پیک کا طے شدہ مغربی روٹ ایک انچ تبدیل نہیں ہوا: صدر ممنون

سی پیک کا طے شدہ مغربی روٹ ایک انچ تبدیل نہیں ہوا: صدر ممنون
سی پیک کا طے شدہ مغربی روٹ ایک انچ تبدیل نہیں ہوا: صدر ممنون

کراچی (ویب ڈیسک)صدرمملکت ممنون حسین نے کہاہے کہ سی پیک کے مغربی روٹ میں تبدیلی سے متعلق باتیں افواہیں ہیں، یقین دلاتا ہوں طے شدہ روٹ میں ایک انچ تبدیلی نہیں کی گئی، مخالفین ترقی کی راہ میں رکاوٹ نہ بنیں منصوبہ عظیم انقلاب کا پیش خیمہ ہے، شکوک و شبہات اور منفی پروپیگنڈے کو ناکام بنا کرنسلوں کے مستقبل کے لیے ہم سب یکسو ہو جائیں،پاک چین دوستی دن بدن مضبوط اور نسل در نسل آگے بڑھ رہی ہے۔

ان خیالات اظہار انہوں نے ہفتہ کوپاکستان میرین اکیڈمی کی 53ویں پاسنگ آﺅٹ پریڈ اور مزارِ قائد کیلئے چین کی جانب سے تحفہ میں دیئے گئے فانوس کو روشن کرنے کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔انھوں نے کہا کہ ہمارا ملک اور یہ خطہ آزمائشوں کے گزرنے کے بعد سیاسی، اقتصادی اور دفاعی استحکام کے شعبوں میں ایک بھرپور اڑان کے لیے پر تول رہا ہے جس میں ہمیں چین کا تعاون حاصل ہے۔صدر مملکت نے کہا کہ پاکستان میرین اکیڈمی کے قیام کا مقصد بھی یہی تھا کہ وطن عزیز کی بحری تجارت اورجہاز رانی کی ذمہ داریاں خود ہمارے بچے سنبھال سکیں۔انھوں نے کہا کہ یہ بات خوش آئند ہے کہ میرین اکیڈمی نے یہ کام پوری ذمہ داری سے سرانجام دے رہی ہے۔اس موقع پر وفاقی وزیربرائے پورٹس اینڈ شپنگ میر حاصل بزنجو، وفاقی سیکریٹری برائے پورٹس اینڈ شپنگ خالد پرویز، کمانڈنٹ پاکستان میرین اکیڈمی کموڈور اکبر نقی بھی موجود تھے۔مزارِ قائد پر تقریب میں چین کے سفیر نے چین کے صدر کا پیغام اس موقع پر پڑھ کر سنایا۔

صدر ممنون حسین نے کہا کہ بابائے قوم قائداعظم محمد علی جناح نے جمہوری آزادیوں، سماجی انصاف،معاشی ترقی اور استحکام پاکستان کے لیے جو فکر دی ہم اس کی روشنی میں اپنے قومی مقاصد کی تکمیل کے لیے سرگرمِ عمل ہیں۔ صدر مملکت نے کہا کہ آہنی برادر چین کی رفاقت ہمارا قیمتی اثاثہ ہے اور یہ تحفہ اس دوستی کی ایک خوبصورت علامت ہے۔ پاکستان اور چین کی باہمی دوستی ، ایک دوسرے کی خوشیوں میں شرکت اور بزرگوں کے احترام کی روایت ہے جس کے تحت عوامی جمہوریہ چین نے مزارِ قائداعظم کے لیے یہ تحفہ فراہم کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اخلاص کی بنیاد پر باہم محبت کرنے والی دو اقوام کے درمیان اس طرح کے تحائف ایک علامت کی حیثیت رکھتے ہیں جس سے دونوں اقوام کے درمیان محبت اور یگانگت میں اضافہ ہوتاہے۔ یہ تحفہ بھی اسی روایت کا تسلسل ہے جو وزیراعظم چو این لائی نے قائم کی۔ انھوں نے کہا کہ پاکستان اور چین امنِ عالم اور دنیا کی ترقی و خوشحالی کے لیے کوشاں ہیں۔ صدر مملکت نے کہا کہ پاک چین اقتصادی راہداری خطے کی تقدیر بدل دے گی۔ ہر گزرتے دن کے ساتھ پاک چین دوستی مضبوط سے مضبوط تر ہو رہی ہے۔ صدر مملکت نے کہا کہ جو بابائے قوم قائداعظم کے مزار کے لیے پاکستان کے عظیم دوست اور مدبر چو این لائی نے 1970 میں فانوس کا تحفہ ارسال کیا تھا جو بانی پاکستان قائداعظم محمد علی جناح اور پاکستانی عوام کے ساتھ عوامی جمہوریہ چین کے قائدین اور عوام کی محبت کا عکاس ہے۔

اس موقع پر صدر مملکت نے مزارِ قائد کے لیے اس خوبصورت اور محبت بھرے تحفے پر چین کے صدر اور حکومتِ چین کا شکریہ ادا کیا۔انھوں نے مزار قائد پر مہمانوں کی کتاب پر تاثرات میں بابائے قوم کو ذبردست خراج عقیدت پیش کیا اور مزار قائد کی بہتر نگہداشت پر انتظامیہ کو شاباش دی۔ اس موقع پر چین کے سفیر سن وی ڈونگ نے چین کے صدر ڈی جن پنگ کا پیغام بھی پڑھ کر سنایا۔ چین کے صدر نے اپنے پیغام میں کہا کہ پاکستان اور چین کی دوستی نسل در نسل چلے گی۔دونوں ممالک کی دوستی خطے کے امن و استحکام کے لیے اہم ہے۔میں پاک چین تعلقات کو بہت اہمیت دیتا ہوں۔آیئے ہاتھوں میں ہاتھ تھام کر پاک چین آل ویدر دوستی اور تعاون کو اپنے عوام کے مفاد میں مذید بنائیں۔

اس موقع پر وزیر اعظم کے مشیر برائے قومی تریخ و ادبی ورثہ ڈویڑن عرفان صدیقی نے بھی خطاب کیا۔صدر مملکت نے چین کے سفیر ، چین کے کمرشل کونسلر ، جوائنٹ سیکریٹری قومی تاریخ و ورثہ ڈویڑن جنید ، مزار مینجمنٹ بورڈ کے انجینئر عارف چوہدری اورفانوس بنانے والی کمپنی کے نمائیندے کو شیلڈز پیش کیں۔سندھ کے سینئر صوبائی وزیر نثار کھوڑو اور کراچی کے میئر وسیم اختر بھی تقریب میں موجود تھے۔

مزید : کراچی

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...