تیلدار اجناس کی کاشت کو فروغ دینا وقت کی ضرورت ہے ،ماہرین

تیلدار اجناس کی کاشت کو فروغ دینا وقت کی ضرورت ہے ،ماہرین

راولپنڈی (اے پی پی)زرعی ماہرین نے کہاہے کہ پاکستان آبادی کے لحاظ سے دنیا کا چھٹا بڑا ملک ہے۔ بڑھتی ہوئی آبادی کی خوردنی تیل کی ضروریات کو پورا کرنا ایک چیلنج ہے۔ پاکستان زرعی ملک ہونے کے باوجود ہر سال خوردنی تیل کی درآمد پر تقریباً 240 ارب روپے کا قیمتی زرمبادلہ خرچ کرتا ہے۔ماہرین نے کہاکہ اس وقت ہم اپنی کل ضروریات کا 33 فیصد خوردنی تیل خود پیدا کرتے ہیں جبکہ 67 فیصد ہمیں درآمد کرنا پڑتا ہے۔ کاشتکار روائتی تیلدار اجناس کی مناسب دیکھ بھال پر توجہ دینے کے ساتھ غیر روائتی تیلدار اجناس خصوصاً سورج مکھی کی کاشت کو فروغ دے کر خوردنی تیل کی ملکی ضروریات پوری کی جاسکتی ہیں ۔

مزید : کامرس