پچھیتی کاشتہ گندم کو پہلاپانی بوائی کے 20 سے25 دن بعد لگائیں ٗزرعی ماہرین

پچھیتی کاشتہ گندم کو پہلاپانی بوائی کے 20 سے25 دن بعد لگائیں ٗزرعی ماہرین

راولپنڈی(این این آئی)محکمہ زراعت نے کہاہے کہ گندم کی پچھیتی کاشت کی گئی فصل کو بعض نازک مراحل پر پانی کی کمی بہت بری طرح متاثر کرتی ہے اس لئے پچھیتی کاشت کی گئی گندم کی فصل سے بہتر پیداوار حاصل کرنے کیلئے آبپاشی کے شیڈول پر مقررہ وقت کے تحت عملدرآمد بہت ضروری ہے لہٰذا کاشتکار گندم کی پچھیتی کاشتہ فصل کو پہلا پانی بوائی کے 20 تا25 دن بعد ضرور دیں کیونکہ اس مرحلے پر پانی دینے سے گندم کا پودا زیادہ جاڑ بناتا ہے اور اس کی جڑیں مضبوط ہوتی ہیں نیز پچھیتی کاشتہ فصل کو دوسرا پانی گوبھ کے وقت فصل کی بوائی کے تقریباً 70 تا80 دن بعد اورتیسرا پانی دانے بننے کی ابتدائی حالت یعنی بوائی کے تقریباً 110 سے115 دن بعددینا چاہیے۔

اور اگر موسم متواتر خشک رہے تو ایک زائد پانی دوسرے اور تیسرے پانی کے درمیانی وقفہ میں لگایا جاسکتاہے تاہم کاشتکار زمین اور موسمی حالات کو مدنظر رکھتے ہوئے پانی لگانے کے وقت میں متعلقہ ماہرین زراعت کی مشاورت سے مناسب تبدیلی بھی کرسکتے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ کاشتکاروں کو گندم کی فصل سے جڑی بوٹیوں کو تلف کرنے کے لیے کیمیائی زہروں کے استعمال کے متعلق احتیاطی تدابیرپر بھی عملدرآمد کرنا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ چوڑے پتوں اور نوکیلے پتوں والی جڑی بوٹیوں کے لیے مخصوص زہریں استعمال ہوتی ہیں اس لیے سپرے کا فیصلہ کرنے سے پہلے محکمہ زراعت کے مقامی عملے سے ضرور مشورہ کرلینا چاہئے اور زہر ہمیشہ سفارش کردہ مقدار میں استعمال کرنی چاہیے کیونکہ زیادہ یا کم مقدار میں زہروں کا استعمال بھی فصل کیلئے نقصان دہ ثابت ہو سکتا ہے۔ انہوں نے کہاکہ کاشتکار جڑی بوٹیوں پر سپرے کے لیے مخصوص نوزل والی مشین استعمال کریں نیز ہوا، بارش یا دھند والے دن ہرگز سپرے نہ کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ کاشتکار کوشش کریں کہ سپرے دوپہر کے وقت کیا جائے اور پانی کی مقدار فی ایکڑ 100 تا120 لیٹر رکھی جائے۔

مزید : کامرس