بی جے پی نے یشونت سہنا کی کشمیر یاترا سے لا تعلقی کا اعلان کر دیا

بی جے پی نے یشونت سہنا کی کشمیر یاترا سے لا تعلقی کا اعلان کر دیا

سرینگر(اے این این) بھارت کی حکمران جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی نے دوٹوک الفاظ میں کہا ہے کہ کشمیر میں یشونت سنہا کی مختلف وفود سے ملاقات کس حق سے ہو رہی ہے اس کی علمیت پارٹی کو نہیں ہے ۔بھارتیہ جنتا پارٹی کشمیر میں اگرکسی سے بات چیت کرے گی وہ بھارتی ائین کے مطابق کرے گئی ورنہ پارٹی کو بات چیت کرنے کی کوئی ضرورت نہیں ہے ۔سرینگر میں بی جے پی کے پارٹی کنونشن میں شرکت کے موقع پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے بھارتیہ جنتا پارٹی کے سینئرلیڈر اور ریاستی جنرل سیکریٹری اشوک کول نے کہا کہ ہم پاکستان سے بات چیت کرنے کیلئے تیار ہیں لیکن وہاں سے بات چیت کرنے میں کوئی تیار نہیں ہے ۔ یشونت سنہا کی کشمیر آمد کے متعلق پوچھے گئے ایک سوال کے جواب میں کول نے کہا یشونت سنہا کا ہمیں کوئی معلوم نہیں ہے کہ اس کو کون سا اد ھیکار ہے اور پارٹی کو بھی اس کی کوئی جانکاری نہیں ہے اس نے جو کیا وہ کیا ہو گا ۔لیکن ہمارا یہ ماننا ہے کہ ہمارے وزیر اعظم نے بات چیت کرنے کیلئے کوئی کسر باقی نہیں چھوڑی ۔ لیکن پاکستان بات کرنے کیلئے ایک قدم بھی آگے نہیں بڑھ رہا ہے ۔انہوں نے کہا کہ ہمارے وزیر اعظم نواز شریف کے جنم دن پر وہاں گئے اور اپنی اوتھ سرمنی میں پاکستانی وزیر اعظم کو یہاں بلایا۔اس سے بڑھ کر اور کیا بات چیت کی پہل ہو سکتی ہے لیکن وہ بات چیت نہیں کرنا چاہتے ہیں تو ایسے میں ہم کیا کر سکتے ہیں ۔

مسئلہ کشمیر کیا ہے ،کشمیریوں سے بات چیت کیوں نہیں ،پاکستان سے کیوں اس سوال کے جواب میں کول نے کہا کہ پاکستان ہی ہے بات چیت تو اس سے کرنی ہے یہاں کے لوگوں سے کیا بات چیت کرنی ہے ۔ہم کشمیر ی قیادت سے کہہ رہے ہیں کہ آپ بھارتی آئین کے مطابق بات کرو ہم کرنے کیلئے تیار ہیں ،انہوں نے کہا کہ یہاں کی قیادت کو بات کرنی ہی نہیں ہے اگر بات کرنی ہوتی توجو آل پارٹی وفد کشمیر بات چیت کرنے کیلئے آیا تھااس کیلئے یہاں دروازے بند نہیں ہوتے بات چیت تو دور کی بات ہے یہاں کی حریت قیادت نے اپنے دروازے تک نہیں کھولے۔اگر بات نہیں کرنی تھی لیکن انہیں گھر میں بلا کر چائے پلانی تھی۔انہوں نے کہا کہ کشمیر میں حالات کو سازگار بنانے میں بی جے پی پر ممکن کوشش کر رہی ہے اور آہستہ ٓاہستہ یہاں کے حالات سازگار ہو رہے ہیں ۔کشمیر میں بھارتیہ جنتا پارٹی کے فروغ کے متعلق انہوں نے کہا کہ لداخ میں پارٹی کو کوئی نہیں جانتا تھا لیکن آج وہاں پارٹی نے ایک پارلیمنٹ نشست پر کامیابی حاصل کی، ہل ڈولپمنٹ کونسل بھی آج بھارتہ جنتا پارٹی کے پاس ہے ۔کول نے کہا کہ پارٹی کشمیر میں کام کرے گی اور ایک دن ایسا آئے گا کہ کشمیر میں بھارتی جنتا پارٹی کا جھنڈا اونچا ہو گا ۔انہوں نے کہا کہ ایسا نہیں ہے کہ بھارتیہ جنتا پارٹی کو یہاں کچھ نہیں ملاپالیمنٹ انتخاب میں پارٹی کو پانچ ہزار ووٹ ملے اس کے بعد اسمبلی انتخاب میں 50ہزار ووٹ حاصل کئے ۔انہوں نے کہا کہ بی جے پی کے یہاں ساڑھے تین لاکھ ممبر ہیں اور ہم آگے بڑھ رہے ہیں ۔

مزید : عالمی منظر