بی بی پاک دامن ، ایمپرس روڈ میں گیس کی شدید قلت، سراپا احتجاج

بی بی پاک دامن ، ایمپرس روڈ میں گیس کی شدید قلت، سراپا احتجاج

 لاہور(لیاقت کھرل)سپیکر قومی اسمبلی سردار ایاز صادق کے انتخابی حلقے میں گڑھی شاہو اور ریلوے اسٹیشن کے وسط میں واقع قدیم آبادی بی بی پاک دامن کے مکین گیس کو ترس گئے ،سردی کا موسم شروع ہوتے ہی گیس غائب ہونے پر گھروں کے چولہے ٹھنڈے پڑ گئے ،مہنگے داموں ایل پی جی استعمال کرنے پر مجبور ،جبکہ بازاری کھانوں سے بوڑھے اور بچے پیٹ ،معدے سمیت متعدد بیماریوں کا شکار ہو گئے ،پاکستان کی ٹیم کے آبادی کا سروے کرنے پر اہل علاقہ سراپا احتجاج اور منتخب نمائندوں سمیت گیس حکام کے خلاف پھٹ پڑے اور گیس کے بل جمع کروانے کی بجائے نذر آتش کرنے کی دھمکی دے دی ،وزیر اعظم ،سپیکر سردارایاز صادق اور وزیر پٹرولیم سے مداخلت کی اپیل کر دی۔اس موقع پر بی بی پاک دامن کی گلی نمبر 23کے رہائشی ملک اصغر نے بتایا کہ بی بی پاک دامن میں گزشتہ 6سالوں سے سردی کا موسم شروع ہوتے ہی گیس غائب ہو جاتی ہے ۔سردیوں کے تین ماہ کے دوران گیس کے بغیر زندگی گزارنے پر مجبور ہیں ،گیس کی بندش کے خلاف ہر سال احتجاج کرتے ہیں ۔گزشتہ سال گیس حکام نے ایمپرس روڈ سے ان کی آبادی کی جانب لائن کو ملایا لیکن اس کے باوجود گیس کا پریشر نہیں بڑھ سکا ہے اس موقع پر گلی نمبر 23کے رہائشی چوہدری ذوالفقار علی ،قیصر عباس ،رحمت علی اور طارق بٹ نے بتایا کہ سردی شروع ہوتے ہی گلی نمبر 23،24اور 25 سمیت پوری آبادی میں گھروں کے چولہے ٹھنڈے پڑ جاتے ہیں اور گزشتہ 6سالوں سے اس صورتحال سے دو چار ہیں اس موقع پر گلی نمبر 24کے رہائشی امتیاز الحق نے بتایا کہ اس کے گھر کا کنزیومر نمبر 80121620001 ہے گیس نہیں آتی لیکن بل 700روپے آ گیا ہے اس موقع پر محمد نعیم نے بتایا کہ گلی نمبر 24،22اور 25میں گیس نہیں آ رہی ہے جبکہ ساتھ ہی گلی نمبر 26میں گیس کا فل پریشر ہے ۔گیس حکام کو دوہرا معیار ختم کرنا چاہیے ۔اس موقع پر عبد الرحمن ،ظفر اقبال ،احمد علی ،امجد علی اور طاہر سبحانی نے بتایا کہ بی بی پاک دامن کے ساتھ آبادی محمد نگر میں موسم گرما ہو یاموسم سرما 12ماہ گیس آتی ہے جبکہ ہماری آبادی میں موسم سرما شروع ہوتے ہی 3ماہ کے لئے گیس غائب ہو جاتی ہے ۔اس موقع پر نگہت ناز نے بتایا کہ اس کے گھر کا کنزیومر نمبر 20411620006ہے اور گیس نہیں آتی جبکہ ہر ماہ بل 590آ رہا ہے ۔محمد اشرف نے بتایا کہ اس کے گھر کا کنزیومر نمبر 2651620006 ہے اور گیس نہیں آتی جبکہ ہر ماہ 450روپے کا بل آتا ہے ۔خاتون زاہدہ پروین اور رانی انجم نے بتایا کہ گیس کی بندش کے باعث بچے بغیر ناشتہ کے سکول چلے جاتے ہیں ۔شہری محمدشیراز نے بتایا کہ گیس نہ آنے کی وجہ بازاری کھانے سے بچے اور بوڑھے افراد بیماریوں کا شکار ہو چکے ہیں اور ایک طرف گیس کے بل ادا کر رہے ہیں تو دوسری جانب ڈاکٹروں کی فیس اور دوائیوں کے اخراجات سمیت مہنگے داموں ایل پی جی خرید کر گزار ا کر رہے ہیں ۔اس موقع پر خاتون مسز تیمور نگہت ناز ،زاہدہ پروین اور رانی انجم سمیت دیگر مکینوں نے کہا کہ وزیر اعظم پاکستان اور سپیکر ایاز صادق نوٹس لیکر ان کی آبادی میں گیس کی بندش کا مسئلہ حل کریں وگرنہ گیس کے بل جمع کروانے کی بجائے نذر آتش کریں گے اور گزشتہ سالوں کی طرح اس سال بھی احتجاجی تحریک چلائی جائے گی۔

مزید : میٹروپولیٹن 1