بھارتی آرمی چیف کا تقرر، سنیئر جرنیلوں کو نظر انداز کرنے پر اپوزیشن کا احتجاج، مودی پر تنقید

بھارتی آرمی چیف کا تقرر، سنیئر جرنیلوں کو نظر انداز کرنے پر اپوزیشن کا ...

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) مودی سرکار کی تنگ نظری، مسلمان جنرل کوآگے آنے سے روکنے کیلئے نئے آرمی چیف کی تقرری میں قواعدوضوابط کی دھجیاں بکھیردیں،حزب اختلاف کی جماعت کانگریس کااحتجاج ، دوسنیئرترین جرنیلوں کونظراندازکئے جانے پروزیراعظم نریندرمودی پرکڑی تنقید۔ بھارتی میڈیا کے مطابق بھارت میں نئے آرمی چیف کے تقرر پر اپوزیشن جماعتوں نے اعتراض اٹھا یا ہے، حزب اختلاف کا کہنا ہے کہ سینئر ترین افسران کو نظرانداز کرکے لیفٹیننٹ جنرل بپن راوت کو کیسے آرمی چیف نامزد کیا گیا۔کانگریس رہنما منیش تیواری نے نریندر مودی کو کڑی تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ لیفٹیننٹ جنرل پراوین بخشی اور لیفٹیننٹ جنرل محمد علی حارث کو کیسے نظرانداز کیا گیاجبکہ لیفٹیننٹ جنرل بپن راوت چوتھے نمبر پر سینئر ترین فوجی افسر تھے۔دائیں بازو کی جماعت سی پی آئی کے محمد سلیم نے بھی تنقید کی اور کہا ایسا لگتا ہے مودی سرکار بھارت کے اہم اداروں کی روایات کو اپنی مرضی کے مطابق ڈھالنا چاہتی ہے۔

مزید : صفحہ آخر