15 دسمبر تک جننگ فیکٹریوں میں ایک کروڑ 47 ہزار 941 گانٹھ کپاس کی آمد

15 دسمبر تک جننگ فیکٹریوں میں ایک کروڑ 47 ہزار 941 گانٹھ کپاس کی آمد

ملتان(جنرل رپورٹر)پاکستان کاٹن جنرز ایسوسی ایشن(پی سی جی اے)نے کپاس کی فیکٹریوں میں آمد کے اعدادو شمار جاری کردےئے ہیں جس کے مطابق15دسمبر2016تک ملک کی جننگ فیکٹریوں میں ایک کروڑ47ہزار941گانٹھ کپاس آئی۔ 15دسمبر2015تک 90لاکھ34ہزار118گانٹھ کپاس فیکٹریوں میں آئی تھی۔ گزشتہ سال کی اسی مدت کے مقابلے میں 11لاکھ13ہزار823گانٹھ کپاس فیکٹریوں میں زیادہ آئی ہے زیادتی کی شرح12.33فیصد رہی۔ صوبہ پنجاب کی فیکٹریوں میں64لاکھ44ہزار847گانٹھ کپاس آئی ہے جو گزشتہ سال کی اسی مدت میں فیکٹریوں میں آنے والی53لاکھ98ہزار809گانٹھ کپاس سے 10لاکھ46ہزار38گانٹھ زیادہ ہے پنجاب میں زیادتی کی شرح 19.38فیصد رہی۔ صوبہ سندھ کی فیکٹریوں میں37لاکھ 3ہزار94گانٹھ کپاس آئی جو گزشتہ سال کی اسی مدت میں فیکٹریوں میں آنے والی36لاکھ35ہزار309گانٹھ کپاس سے 67ہزار785گانٹھ زیادہ ہے سندھ میں زیادتی کی شرح1.86فیصد رہی 15دسمبر2016تک فیکٹریوں میں آنے والی کپاس سے96لاکھ78ہزار546گانٹھ روئی تیار کی گئی ملک میں 520جننگ فیکٹریاں آپریشنل ہیں ایکسپورٹرز نے رواں سیزن میں ایک لاکھ94ہزار844گانٹھ روئی خرید کی ہے جبکہ ٹیکسٹائل سیکٹر نے84لاکھ51ہزار386 گانٹھ روئی خرید کی ہے۔ٹریڈنگ کارپوریشن آف پاکستان نے کاٹن سیزن 2016-17میں خریداری نہیں کی ہے۔ غیر فروخت شدہ سٹاک15لاکھ1ہزار711گانٹھ کپاس اور روئی موجود ہے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...