وزیراعظم کی ساکھ کا سوال ہے،پارلیمنٹ میں آکربتائیں ایوان میں دیابیان یاقطری شہزادے والاموقف درست ہے: شاہ محمود قریشی

وزیراعظم کی ساکھ کا سوال ہے،پارلیمنٹ میں آکربتائیں ایوان میں دیابیان یاقطری ...
وزیراعظم کی ساکھ کا سوال ہے،پارلیمنٹ میں آکربتائیں ایوان میں دیابیان یاقطری شہزادے والاموقف درست ہے: شاہ محمود قریشی

  

اسلام آباد( ڈیلی پاکستان آن لائن)پی ٹی آئی کے سربراہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ سوال وزیراعظم کی ساکھ کا ہے ان کو چاہیے کہ پارلیمنٹ میں آئیں اور بتائیں کہ ان کا ایوان میں دیا جانے والا بیان درست ہے یاں قطری شہزادے والا موقف درست ہے۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان تحریک انصاف کے رہنما شاہ محمود قریشی کا قو می اسمبلی میں تقریر کرتے ہوئے کہنا تھا کہ سپریم کورٹ اور عوام میں قطری شہزادے کا خط زیربحث ہے ،جب تک اس کا جواب نہیں ملتا پی ٹی آئی عدالت،ایوان ،عوام میں اس بات کا تذکرہ کرتی رہے گی،

نواز شریف پارلیمنٹ میں آکر اس بات کو واضح کریں کہ ان کا ایوان میں دیا بیان درست تھا یاں قطری شہزادے کا جو موقف اختیار کیا وہ درست تھا، جبکہ وزیراعظم کے وکیل نے ایوان میں دیے بیان کو سپریم کورٹ میں سیاسی قراردیدیا تھا، انہوں نے کہا کہ عوام اس بات کے انتظار میں ہیں حکومت کی جانب سے کوئی ذمے داریقین دہانی کرادے یاںوزیراعظم خود ہی وضاحت کر دیں کہ آیا اصل کہانی کیا ہے۔

شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ ہم حکومتی بنچز کی بات سننا چاہتے ہیں ، ماحول کو خراب کرنا ہمارا مقصد نہیں ہے اور نہ ہی خراب ماحول عوام کے مفاد میں ہے،ہمارا حکومت سے محض یہ مطالبہ ہے کہ عوام کے سامنے وزیراعظم کے بیانات کی تصدیق کریں اورعوام کو سچائی سے روشناس کروائیں۔

پی ٹی آئی کے پارلیمانی لیڈرشاہ محمود پریشی نے جواب میں کہا ہے کہ وزیر اعظم فرار ہیں تو میرے نزدیک فراری ہیں،میں مختصر بات کروں گا مجھے وزارت نہیں چاہیے،اگر کوئی فرار ہے یا فراری ہے تو وہ وزیراعظم نوازشریف ہیں،مجھے پتا ہے جب وہ غیرضروری بات کریں گے تو خطاب ختم کرادوں گا۔

مزید : اسلام آباد