تاریخ میں پہلی مرتبہ سعودی عرب نے جدید ترین جنگی ہتھیار بنالیا، دشمنوں کی نیندیں اڑادیں

تاریخ میں پہلی مرتبہ سعودی عرب نے جدید ترین جنگی ہتھیار بنالیا، دشمنوں کی ...

ریاض(مانیٹرنگ ڈیسک)اب تک سعودی عرب جنگی و کارگو طیاروں کے لیے بیرونی دنیا پر انحصار کرتا تھا تاہم اب اس نے یوکرین کی مدد سے اپنے ملک میں طیارہ سازی کی صنعت کا آغاز کر دیا ہے اور جدید ترین جنگی طیارے بنانے کی تیاری شروع کر کے دشمنوں کی نیندیں اڑا دی ہیں۔

الشرق الاوسط کی رپورٹ کے مطابق سعودی عرب نے گزشتہ روز یوکرین کی طیارہ ساز کمپنی ”انٹونوف“ (Antonov)کے ساتھ معاہدے پر دستخط کر لیے ہیں جس کے تحت انٹونوف سعودی عرب میں طقانیہ ایروناٹکس فیسیلٹی میں اے این132ملٹی مشن ٹرانسپورٹ ایئرکرافٹ تیار کرے گی۔ رپورٹ کے مطابق یہ طیارے جاسوسی اور جنگی مقاصد کے علاوہ کارگو کے کام بھی آئیں گے۔ رپورٹ کے مطابق اس طیارے کے ڈیزائنرز کا کہنا ہے کہ ”یہ الیکٹرانک وارفیئر ایئرکرافٹ فضائی وارننگ کا سامنا کرنے کی صلاحیت بھی رکھتے ہیں۔ ان میں ایئرڈیفنس سسٹم بھی نصب ہو گا۔ اس طیارے کے دو ماڈلز تیار کیے جائیں گے جن میں ایک پائلٹس چلائیں گے جبکہ ایک پائلٹ کے بغیر پرواز کرنے والا ہو گا جو جاسوسی کے کام آئے گا۔“

’شام میں تم یہ کام نہیں کر سکو گے‘ قریبی ترین اتحادی روس نے ہی بشارالاسد کو ’خبردار‘ کردیا، امیدوں پر پانی پھیر دیا

رپورٹ کے مطابق ذرائع کا کہنا ہے کہ سعودی عرب اپنی معیشت کو تیل کی آمدن سے دیگر ذرائع آمدن پر منتقل کرنے کے لیے جدوجہد کر رہا ہے اور اپنے ملک میں طیارہ سازی کی صنعت شروع کرنے کا یہ اقدام انہی کوششوں کاحصہ ہے۔طیارہ سازی کے اس پروگرام کی افتتاحی تقریب کل(بروز منگل) کیف میں ہو گی جس میں دونوں ملکوں کے حکام شریک ہوں گے۔ ان طیاروں کی تجرباتی پروازیں بھی سعودی عرب میں ہی ہوں گی۔قبل ازیں یوکرین کے صدر پیٹروپوروشنکو نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ فیس بک پر اس کثیرالمقاصد طیارے کے ماڈل کی ایک ویڈیو بھی پوسٹ کی ہے اور لکھا ہے کہ یہ اے این 132طیارہ سعودی عرب کے تعاون سے تیار کیا جا رہا ہے۔

مزید : عرب دنیا

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...