صرف ملٹی نیشنل کمپنیوں کا بیج کیوں استعمال کیا جائے ،ہائی کورٹ نے متعلقہ حکم طلب کرلئے

صرف ملٹی نیشنل کمپنیوں کا بیج کیوں استعمال کیا جائے ،ہائی کورٹ نے متعلقہ حکم ...
صرف ملٹی نیشنل کمپنیوں کا بیج کیوں استعمال کیا جائے ،ہائی کورٹ نے متعلقہ حکم طلب کرلئے

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی) لاہور ہائیکورٹ نے فصلوں کی کاشت کے لئے کسانوں پر ملٹی نیشنل کمپنیوں کے بیج کا استعمال لازمی قرار دینے کیخلاف دائردرخواست پر وزارت خوراک و زراعت کے سینئر افسر کو 27 جنوری کو جواب سمیت طلب کر تے ہوئے سماعت ملتوی کردی ۔درخواست گزار کے وکیل شیراز ذکاءایڈووکیٹ نے عدالت کے روبرو موقف اختیار کیا کہ حکومت نے بیج ایکٹ دو ہزار پندرہ میں ترمیم کر دی ہے۔ جس کے تحت کسانوں کو اس بات کا پابند بنایا گیا ہے کہ وہ فصلوں کی کاشت کیلئے صرف ملٹی نیشنل کمپنیوں کا بیج ہی استعمال کرینگے، کسان اپنا کاشت کردہ بیج استعمال نہیں کر سکتے، اس اقدام سے کسانوں کو کمپنیوں سے مہنگا بیج خریدنا پڑے گا ۔جس سے فصل کی لاگت میں اور اشیائے خوردنوش کی قیمتوں میں اضافہ ہوگا، حکومت نے یہ اقدام شعبہ زراعت پر ملٹی نیشنل کمپنیوں کی اجارہ داری قائم کرنے کیلئے کیا ہے، لہذا بیج ایکٹ دو ہزار پندرہ کی دفعہ تئیس کو غیرآئینی قرار دیتے ہوئے کالعدم کیاجائے، ابتدائی سماعت کے بعد عدالت نے وزارت خوراک و زراعت کے سینئر افسرو کو ستائیس جنوری کو جواب سمیت طلب کرلیا، عدالت نے آئندہ تاریخ سماعت پر مقامی بیج کے استعمال، درآمد اور برآمد کا ریکارڈ بھی پیش کرنے کا حکم دیا ہے۔

مزید : لاہور