کوئٹہ میں پھر دہشت گردی کی واردات

کوئٹہ میں پھر دہشت گردی کی واردات

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


کوئٹہ ایک بار پھر دہشت گردوں کے وارسے لہولہان ہوگیا دشمن قوتوں نے منظم سازش کے تحت مذہبی منافرت پھیلانے کے لئے میتھوڈسٹ چرچ میں خودکش حملے اور فائرنگ کے ذریعے اس وقت وار کیا، جب مسیحی اپنے مذہبی تہوار کرسمس کے حوالے سے ابتدائی تقریبات منانے کے لئے جمع تھے۔ تین دہشت گردوں نے حملہ کیا، ایک دہشت گرد کو سیکیورٹی فورسز نے واصلِ جہنم کیا جبکہ دو دہشت گرد فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے۔ دہشت گردی کی اس واردات میں عورتوں اور بچوں سمیت 9افراد جاں بحق اور 45زخمی ہوئے۔ جب یہ حملہ ہوا، اس وقت 400 مسیحی چرچ کے اندر موجود تھے۔ سیکیورٹی فورسز نے بروقت کارروائی کرکے دہشت گردوں کو آگے بڑھنے کا موقع نہ دیا، ورنہ بہت زیادہ تباہی ہوسکتی تھی۔ دہشت گرد تنظیم داعش نے اس حملے کی ذمہ داری قبول کرلی ہے۔ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے واضح کیا ہے کہ حملے کا مقصد قوم میں تفرقہ ڈالنا تھا۔ ایسے گھناؤنے اقدامات کا جواب دینے کے لئے پوری قوم متحد ہے۔ آرمی چیف جنرل باجوہ کا یہ بیان پاکستانی قوم کے جذبات کی ترجمانی کرتا ہے۔ اسی طرح وزیر اعظم عباسی اور دیگر حکومتی عہدیداروں اور سیاسی راہنماؤں کی طرف سے اس دہشت گردی کی سخت مذمت کرتے ہوئے پختہ عزم کا اظہار کیا گیا ہے کہ دہشت گردوں کے خلاف جنگ جاری رہے گی۔مسیحی اپنامذہبی تہوار ’’کرسمس‘‘ عقیدت و احترام سے مناتے ہیں۔ مرکزی تقریب تو 25دسمبر کو منعقد ہوتی ہے تاہم گرجا گھروں میں دس روز قبل ہی دعائیہ تقریبات شروع کردی جاتی ہیں، اتوار کے روز بھی مسیحیوں کی بڑی تعداد گرجا گھر کے اندر جمع تھی کہ حملہ آوروں نے دہشت گردی کرکے کرسمس کے ماحول کو خراب کرنے کی کوشش کی۔ اللہ کے فضل و کرم سے سیکیورٹی فورسز نے اُن کا مقابلہ کیا اور وہ اپنے مذموم مقاصد میں کامیاب نہ ہوسکے۔ اس حملے کے ذریعے مسلمانوں کے خلاف مسیحیوں کے جذبات بھڑکانے کی کوشش کی گئی جوناکام رہی۔ اسلام امن اور سلامتی کی تعلیم دیتا ہے۔ وطن عزیز میں اقلیتوں کو تمام بنیادی حقوق حاصل ہیں اور انہیں تحفظ مہیا کرنے کے لئے موثر انتظامات کئے جاتے ہیں۔ دشمنوں کی سازش یہ تھی کہ کرسمس کی ابتدائی تقریبات میں خود کش حملے سے مسیحی برادری کو مشتعل کرکے انتشار اور افراتفری پھیلائی جائے ۔ تاہم اس گہری سازش کو اچھی طرح سمجھتے ہوئے مسیحی برادری کسی غلط فہمی کا شکار نہیں ہوئی اور جذبات پر قابو پاکر حوصلے سے دشمنوں کے اس وار کوبرداشت کیا ہے۔ حالات کا یہ تقاضا ہے کہ دشمنوں کی چال کو سمجھتے ہوئے قومی اتحاد کو ہر صورت میں قائم رکھا جائے۔ وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی اور آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے قوم کے اتحاد کی تعریف کرتے ہوئے یقین دلایا ہے کہ دشمنوں کے ایسے بزدلانہ اور اوچھے ہتھکنڈوں کا موثر جواب دیا جائے گا۔ اپنے اتحاد کے ذریعے تو فوری جواب دے دیا گیا ہے ان شا اللہ کوئٹہ چرچ میں دہشت گردی کے ذمے داران کو بہت جلد ایسا جواب دیا جائیگا، جسے ہمارا دشمن دیر تک یاد رکھے گا۔

مزید :

اداریہ -