سال رواں3ہزار خواتین نے طلاق کی ڈگریاں حاصل کیں

سال رواں3ہزار خواتین نے طلاق کی ڈگریاں حاصل کیں

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لاہور(نامہ نگار)یکم جنوری سے 15 دسمبر 2017 تک ایک لاکھ 80ہزار مقدمات کے فیصلے کیے گئے ۔3ہزار خواتین نے خلع کی بنیاد پر طلاق کی ڈگریاں حاصل کیں ،ایک ہزار پانچ بچے گھریلو ناچاقی کی وجہ سے ماں یا باپ کی شفقت سے محروم ہوئے جبکہ عدالتوں نے 20ہزار مختلف کیسوں میں حکم امتناعی جاری کئے ۔2017ء کے آخر تک اداکارہ میرا، اداکارہ نور اور گلوکارہ حمیرا ارشدکے کیس موضوع بحث بنے رہے ۔واضح رہے کہ رواں سال گھریلو ناچاقی پر زیادہ کیس دائر کئے گئے ہیں۔تفصیلات کے مطابق فیملی عدالتوں میں 2ہزار دعوے حق مہر، خرچے اور طلاق کے مقدمات جبکہ5ہزار بچوں کے حصول کے دعوے گارڈین کی 7عدالتوں میں دائر کئے گئے ۔رواں سال میں تقریبا2ہزاربچوں کی مختلف فیملی کیسوں میں عدالتوں کے حکم پر سول کورٹ میں ماں اور باپ سے ملاقات کرائی گئی۔رواں سال میں ہی انصاف کی فراہمی کے لئے مصالحتی سنٹر کی ایک عدالت کو جوڈیشل کمپلیکس سیشن کورٹ سے سول کورٹ منتقل کیاگیا۔سول کورٹ میں 3مختلف بلاکوں کو پل بنا کر ایک دوسرے کے ساتھ سکیورٹی کومدنظر رکھتے ہوئے یکجابھی کردیا گیا۔سول کورٹ میں چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ کے حکم پر اوورسیز پاکستانیوں کے کیس الگ سننے کے لئے 3عدالتیں بھی قائم کی گئی ہیں جبکہ رواں سال ہی پہلی بارتعمیل کنندہ کو موبائل فونزاور موٹر سائیکلیں بھی فراہم کی گئی ہیں ۔

مزید :

علاقائی -