اقتصادی امورڈویژن اور ایشیائی ترقیاتی بینک کے درمیان دو قرضوں کے معاہدے

اقتصادی امورڈویژن اور ایشیائی ترقیاتی بینک کے درمیان دو قرضوں کے معاہدے

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

اسلام آباد (این این آئی)اقتصادی امور ڈویڑن اور ایشیائی ترقیاتی بینک (اے ڈی بی) نے راہداری ترقی سرمایہ کاری پروگرام (سی اے آر ای سی) اور پنجاب کے وسطی شہروں کی بہتری کے سرمایہ کاری منصوبے کیلئے 380 ملین ڈالر لاگت کے منصوبوں کیلئے دو قرضوں کے معاہدوں پر دستخط کر دیئے ہیں۔ ایشیائی ترقیاتی بینک (اے ڈی بی ) وسط ایشیائی علاقائی اقتصادی تعاون کے تحت انفراسٹرکچر منصوبوں کیلئے 800 ملین ڈالر فراہم کرے گا۔ اس پروگرام کے تحت پہلی قسط ایشیائی ترقیاتی بینک نیشنل ہائی وے اتھارٹی کو این 55 روڈ نیٹ ورک کی بہتری کیلئے 180 ملین ڈالر فراہم کرے گا۔ این ایچ اے 66 کلومیٹر پیٹارو سیہون روڈ پر دو اضافی لینز اور 43 کلومیٹر لمبی رتوڈیرو۔شکارپور روڈ پر مزید دو لینز تعمیر کرے گی۔ اس سے 34کلو میٹر 4رویہ درہ آدم خیل پشاور روڈ کی بحالی میں بھی مدد ملے گی اور این ایچ اے کو ان اقساط سے مجموعی طور پر سروسز کی بہتری میں بھی مدد ملے گی ۔ایشیائی ترقیاتی بنک (اے ڈی بی) پنجاب کے وسطی شہروں کی بہتری کے سرمایہ کاری منصوبے کے لئے 200ملین ڈالر فراہم کریگا ۔اس منصوبے کے تحت پنجاب حکومت سیالکوٹ اور ساہیوال میں شہری خدمات بہتری لائے گی ۔اس سے پانی سپلائی ،سینی ٹیشن اور ویسٹ منیجمنٹ سسٹم ، پارکس ،فٹ پاتھ ،گرین بیلیٹس ، اور بس ٹرمینلز کی بہتری میں مددملے گی،اس کے نتیجے میں ان دونوں شہروں میں بسنے والے لوگوں کا معیار زندگی بلند ہوگا ۔قرض معاہدوں پر دستخط کی تقریب میں پاکستان کی جانب سے سیکرٹری اقتصادی امور ڈویڑن عارف احمد خان اور ایشیا ترقیاتی بنک کے کنٹرری ڈائریکٹر شوہانگ یانگ نے دستخط کیے ۔نیشنل ہائی وے اتھارٹی (این ایچ اے ) اور لوکل گورنمنٹ اینڈ ڈویلپمنٹ پنجاب کے نمائندے بھی شریک تھے ۔اس موقع پر گفتگو کر تے ہوئے سیکرٹری اقتصادی امور ڈویڑن عارف احمد خان نے ایشیائی ترقیاتی بنک کی جانب سے پاکستان میں انفراسٹرکچر اور شہری خدمات کی بہتری کے لئے تعاون کو سراہا۔انہوں نے کہا کہ پاکستان اقتصادی تعاون اور فزیکل انفراسٹرکچر میں بہتری کے ذریعے علاقائی رابطے کو مزید موثر بنارہا ہے۔پنجاب کے وسطی شہروں کی بہتری کے سرمایہ کاری منصوبے سے ساہیوال اور سیالکوٹ میں سٹیٹ آف دی آرٹ شہری خدمات کی فراہمی یقینی ہوگی۔
ورضے معاہدے

مزید :

علاقائی -