56کمپنیوں میں کرپشن اور انکی تشکیل کیخلاف درخواست پر تمام کمپنیوں سے 15جنوری تک جواب طلب

56کمپنیوں میں کرپشن اور انکی تشکیل کیخلاف درخواست پر تمام کمپنیوں سے 15جنوری ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لاہور(نامہ نگارخصوصی )لاہور ہائیکورٹ نے پنجاب حکومت کی 56کمپنیوں میں مبینہ کرپشن اور ان کی تشکیل غیر قانونی قرار دینے کے لئے دائر درخواست پر تمام کمپنیوں سے 15جنوری تک تحریری جواب طلب کر لیا ہے۔مسٹر جسٹس شاہد کریم نے شیراز ذکا ء ایڈووکیٹ سمیت دیگر کی درخواستوں پر سماعت شروع کی تو عدالتی حکم پر تین سرکاری کمپنیوں پنجاب سکلڈ ڈویلپمنٹ کمپنی، انجینئرنگ کنسلٹنسی سروسز اور اربن ڈویلپمنٹ کی جانب سے مصطفی رمدے ایڈووکیٹ نے عدالت میں جواب داخل کرواتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ تینوں کمپنیوں کی تشکیل آئین اور قانون کے تحت عمل میں لائی گئی ہے اور آڈیٹر جنرل پاکستان کی جانب سے ان کمپنیوں کا مکمل آڈٹ کیا جاتا ہے ،کمپنیوں میں مبینہ کرپشن کے الزامات بے بنیاد ہیں، درخواست گزاروں نے موقف اختیار کر رکھا ہے کہ پنجاب حکومت کی جانب سے بنائی صاف پانی کمپنی سمیت 56کمپنیاں غیر قانونی ہیں اور ان کمپنیوں میں کرپشن کی جا رہی ہے۔لاہور ہائیکورٹ میں رانا علم الدین ایڈووکیٹ کی جانب سے دائر کی گئی درخواست میں چیف سیکرٹری پنجاب، پنجاب حکومت، سیکرٹری فنانس کو فریق بناتے ہوئے موقف اختیار کیا گیا ہے کہ پنجاب کی 56 کمپنیوں کی تشکیل غیر قانونی ہے ۔

مزید :

علاقائی -