مقبوضہ بیت المقدس تنازع ، ٹرمپ انتظامیہ کا یکطرفہ فیصلہ قبول نہیں ، امریکہ اقدامات واپس لے : پاکستان

مقبوضہ بیت المقدس تنازع ، ٹرمپ انتظامیہ کا یکطرفہ فیصلہ قبول نہیں ، امریکہ ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)قومی سلامتی کمیٹی کے اجلاس میں شرکاء نے کہا کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیلی دارالحکومت تسلیم کرنے پرمسلم امہ کو تشویش ہے، ٹرمپ انتظامیہ کا یکطرفہ فیصلہ پاکستان کو قابل قبول نہیں، امریکا حال ہی میں اٹھائے گئے ان اقدامات کو واپس لے۔وزیراعظم کے زیر صدارت ہونے والے اجلاس میں وزیر داخلہ احسن اقبال، آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ، مشیر قومی سلامتی ناصر جنجوعہ، جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی جنرل زبیر محمود حیات سمیت مسلح افواج کے سربراہوں نے شرکت کی۔قومی سلامتی کمیٹی نے کہا کہ دہشت گرد حملے اسلام کی امن اوررواداری کی تعلیمات کے خلاف ہیں، کوئٹہ چرچ حملے کی بھرپور مذمت کرتے ہیں۔اجلاس کے دوران شرکاء نے کہا کہ امریکی انتظامیہ کی ذمہ داری ہے کہ وہ مسئلے کے منصفانہ حل کیلئے اقدامات کرے۔اس موقع پر نیشنل ایکشن پلان پر سیکرٹری داخلہ نے بریفنگ کے دوران کہا کہ نیشنل ایکشن پلان پرعملدرآمد میں موثر پیش رفت ہوئی ہے۔قومی سلامتی کمیٹی کا موقف تھا کہ پالیسی اور ادارہ جاتی اصلاحات پر مزید توجہ دینے کی ضرورت ہے، پاکستان فنانشل ایکشن ٹاسک فورس کی ذمہ داریوں کو پورا کرنے کیلئے پرعزم ہے، پاکستان عالمی برادری کا ایک ذمہ دار ملک ہے۔کمیٹی نے ہدایت دی کہ نیشنل سکیورٹی پالیسی کو تمام سٹیک ہولڈرز کی مدد سے جلد ازجلد حتمی شکل دی جائے۔قبل ازیں اجلاس کے دوران سیکرٹری خارجہ تہمینہ جنجوعہ نے استنبول کے اوآئی سی سربراہ اجلاس پر بریفنگ دی۔
پاکستان

مزید :

صفحہ اول -