ولی بابر کیس ،مجرم فیصل موٹاکی اہلیہ کی درخواست پر نوٹسز جاری

ولی بابر کیس ،مجرم فیصل موٹاکی اہلیہ کی درخواست پر نوٹسز جاری

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


کراچی(اسٹاف رپورٹر )سندھ ہائیکورٹ نے ولی بابر قتل کیس میں ملوث مجرم فیصل محمود عرف نفسیاتی کی جانب سے سکھر سے کراچی سینٹرل جیل منتقلی کے لیے دائر درخواست پر ہوم سیکرٹری ، آئی جی سندھ ، آئی جی جیل خانہ جات سمیت دیگر کو نوٹسز جاری کر دیئے ۔ سندھ ہائیکورٹ میں ولی بابر قتل کیس میں ملوث مجرم فیصل محمود عرف نفسیاتی کی جانب سے سکھر سے کراچی سینٹرل جیل منتقلی کے لیے دائر درخواست کی سماعت ہوئی ۔ سندھ ہائیکورٹ میں مجرم فیصل عرف نفسیاتی کی اہلیہ کی جانب سے دائر درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ ملاقات کے لیے کراچی سے سکھر جانے کے لیے بہت مشکلات پیش آتی ہیں ۔ لہذا عدالت سے استدعا ہے کہ مجرموں کو سینٹرل جیل کراچی منتقل کیا جائے ۔ عدالت نے مجرم فیصل محمود کی اہلیہ کی جانب سے دائر درخواست سماعت کے لیے منظور کرتے ہوئے ہوم سیکرٹری ، آئی جی سندھ ، آئی جی جیل خانہ جات ، پراسیکیوٹر جنرل آف سندھ اور ایڈووکیٹ جنرل سندھ کو نوٹسز جاری کر دیئے ۔ واضح رہے کہ جیل حکام کے مطابق سینٹرل جیل میں دہشت گردوں کی موجودگی کے باعث سکیورٹی کے خدشات موجود ہیں ۔ ولی بابر قتل کیس طویل عرصے سے خوف و دہشت کی علامت بنا رہا ہے ۔ ولی بابر قتل کیس میں مجرموں کے خلاف گواہی دینے والے متعدد گواہان اور وکلاء کو قتل کر دیا گیا ہے ۔ اس لیے مجرموں کو سکھر جیل منتقل کیا گیا ۔ ولی بابر قتل کیس میں سید محمد علی رضوی ، فیصل محمود عرف نفسیاتی ، طاہر نوید ، محمد شاہ رخ کو انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت نے سزائے موت اور عمر قید کی سزائیں سنائی ہیں ۔