مودی حکومت کی انتہا پسند سوچ پورے خطے کے امن کیلئے خطرہ بن چکی:علامہ خادم رضوی

مودی حکومت کی انتہا پسند سوچ پورے خطے کے امن کیلئے خطرہ بن چکی:علامہ خادم رضوی
مودی حکومت کی انتہا پسند سوچ پورے خطے کے امن کیلئے خطرہ بن چکی:علامہ خادم رضوی

  



لاہور(آئی این پی)تحریک لبیک پاکستان کے سربراہ علامہ خادم رضوی نے کہا ہے کہ مسلمان مخالف متنازع شہریت قانون بھارتی جمہوریت کے منہ پر طمانچہ ہے۔مودی حکومت کی انتہا پسند سوچ پورے خطے کے امن کیلئے خطرہ بن چکی ہے،مودی حکومت کی جانب سے طلبہ و طالبات کو تشدد کا نشانہ بنانہ انتہائی قابل مذمت ہے۔

علامہ خادم رضوی  کا کہنا تھا کہ بھارتی عدلیہ بھی مودی کی بی ٹیم بن چکی ہیں،عدالتوں کا کام انصاف کے تقاضے پورے کرنا ناکہ حکومتوں کی آلہ کار بنیں،بھارتی پولیس پر امن احتجاج کرنے والے نہتے شہریوں کو فائرنگ،شیلنگ اور تشدد کا نشانہ بنارہی ہے اور نام نہاد انسانی حقوق کی علمبردار تنظیمیں اور امریکہ برطانیہ نے بے شرمی کی انتہائی کردی ہے۔علامہ خادم رضوی نےکہا کہ مودی نے پورے بھارت میں ہندو انہ سوچ مسلط کرنے کی کوشش کی ہے،مودی حکومت بھارت سے اقلیتوں کا خاتمہ کرنا چاہتی ہے،بھارت میں مسلسل چھ سال سے اقلیتوں پر ظلم اور تشدد کیا جارہا ہے،بھارت اقلیتوں کی غیر محفوظ ملک بن چکا ہے،بھارتی پولیس نے علی گڑھ یونیورسٹی اور ملیہ جامعیہ کی بچیوں پر تشدد کیا ہے،کیا امریکہ کو یہ بھارتی دہشتگردی نظر نہیں آرہی؟پاکستان کے پاس مودی کا علاج موجود ہے ،ہم نے ایٹم بم زنگ لگانے کیلئے نہیں رکھے۔

مزید : علاقائی /پنجاب /لاہور