حکومت اداروں کو مستحکم کرنیکی پالیسی پر گامزن ہے،یاسر ہمایوں

حکومت اداروں کو مستحکم کرنیکی پالیسی پر گامزن ہے،یاسر ہمایوں

  



لاہور (لیڈی رپورٹر) صوبائی وزیر ہائیر ایجوکیشن راجا یاسر ہمایوں سرفراز نے کہا ہے کہ بدقسمتی سے پاکستان کی 70 سالہ تاریخ میں ادارے مضبوط نہیں ہو سکے جبکہ فوج ہی ایک واحد ادارہ ہے جہاں ڈسپلن پر عملدرآمد کیا جاتا ہے، پاکستان تحریک انصاف کی حکومت اداروں کو مستحکم کرنے کی پالیسی پر گامزن ہے۔ وہ پنجاب یونیورسٹی میں شعبہ تاریخ اور مطالعہ پاکستان کے پروفیسر ڈاکٹر محبوب حسین کی تصنیف’دی پارلیمنٹ آف پاکستان'کی تقریب رونمائی سے خطاب کر رہے تھے۔ اس موقع پر پرووائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم مظہر، ڈین فیکلٹی آف آرٹس اینڈ ہیومینٹیز پروفیسر ڈاکٹر اقبال چاؤلہ، چیئرپرسن ہیومین رائٹس کمیشن آف پاکستان مہدی حسن، سینئر تجزیہ کار ظفر اللہ خان، سابق ڈائریکٹر پاکستان سٹڈی سنٹر ڈاکٹر مسرت عابد،ر یجنل سیلز ڈائریکٹر آکسفورڈ یونیورسٹی پریس فیاض حسین راجا، پروفیسر ڈاکٹر محبوب حسین، فیکلٹی ممبران، ریسرچ سکالرزاور طلباؤطالبات نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے راجا یاسر ہمایوں نے کہا کہ کئی وجوہات ہیں کہ ہم اپنے اداروں پر انحصار نہیں کر تے پاکستان کی سٹریٹجک اہمیت کو دنیا مانتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں ڈیبٹ کا معیار گرا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پارلیمنٹ کا کردار بامعنی ہونا چاہیے اور جمہوریت کا تسلسل جاری رہنا چاہے۔انہوں نے کہا کہ حکومت ملک کو بہتری کی جانب گامزن کرنے کیلئے اقدامات کر رہی ہے۔ انہوں نے پارلیمنٹ پر جامع کتاب لکھنے پر پروفیسر ڈاکٹر محبوب حسین کو مبارک باد پیش کی۔ پرووائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم مظہر نے کہا کہ پاکستان دنیا کے چند ممالک میں شامل ہے جو پارلیمانی جمہوریت کے حق کی وجہ سے معرض وجود میں آیا۔

مزید : میٹروپولیٹن 1