کنگ ایڈورڈ میڈیکل یونیورسٹی کا سالانہ بین الاقوامی سمپوزیم

  کنگ ایڈورڈ میڈیکل یونیورسٹی کا سالانہ بین الاقوامی سمپوزیم

  



لاہور(پ ر)کنگ ایڈورڈ میڈیکل یونیورسٹی کا 39 واں سالانہ بین الاقوامی دو روزہ سائنٹفک سیمپوزیم 18.12.2019 سے شروع ہوگیا پہلے روز تیس سے زائد ملکی اور غیر ملکی ماہرین نے طب کے مختلف شعبہ جات اور موضوعات پر لیکچرز دئیے۔ افتتاحی سیشن میں چار موضوعات پیش کیے گئے۔ کارڈیالوجی خدمات کی ترقی، آئی ٹی اور مینجمنٹ سسٹم، جی پی / ایم سی ایچ اور ذیابیطس اور پلمونولوجی، ڈاکٹر شاہد محمود نے "نجی شعبے کی خدمات وقت کی ضرورت" کے موضوع پر ایک لیکچر دیا۔انہوں نے اپنے لیکچر میں پاکستان میں بنیادی صحت کی دیکھ بھال سے متعلق اہم اعدادوشمار پیش کیے۔ ڈاکٹر فیصل سلطان نے "آئی ٹی اینڈ مینجمنٹ سسٹم" کے بارے میں سیر حاصل گفتگو کی۔ انہوں نے دواؤں کے غلط استعمال، صحیح بیماری کی تشخیص، کمپیوٹر کی مدد سے اینٹی مائکروبیل نسخے کم کرنے کے لئے آئی ٹی کی افادیت پر تبادلہ خیال کیا۔ اس کی وجہ سے مریض جلد صحت یاب ہوں گے. پروفیسر اے ایس چغتائی نے "لیب کی تشخیص میں پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ" کے بارے میں بات کی۔ مریضوں کو بروقت رپورٹ فراہم کرنے اور میڈیکل طلباء کو درس و تدریس کا بہتر موقع فراہم کرنے کے لئے سرکاری اور نجی اداروں کا تعاون وقت کی ضرورت ہے۔ پروفیسر خالد مسعود گوندل، وائس چانسلر کنگ ایڈورڈ میڈیکل یونیورسٹی، لاہور، نے پوسٹ گریجویٹ ٹریننگ کی الیکٹرانک مانیٹرنگ کے بارے میں تفصیل سے گفتگو کی۔ انہوں نے وضاحت کے ساتھ بتایا کہ مشینیں انسانی ذہانت کی جگہ نہیں لے سکتیں۔ انہوں نے قابلیت پر مبنی میڈیکل تعلیم کی اہمیت کی وضاحت کی۔۔ ڈاکٹر شفیق گل نے برطانیہ میں شعبہ پیتھالوجی کی طب میں خدمات پر اپنا مقالہ پیش کیا.۔ مسٹر عثمان خالد وحید نے "صحت کی دیکھ بھال کا جدت اور مستقبل" کے بارے میں اظہار خیال کیا۔ انہوں نے صحت کی دیکھ بھال میں بہتری لانے کے لئے سستا لائسنس یافتہ علاج، سستی تشخیص، علاج کی توسیع اور صلاحیت میں اضافے پر تبادلہ خیال کیا۔۔پروفیسر عبدالباری خان، چیف ایگزیکٹو آفیسر، انڈس ہیلتھ نیٹ ورک نے،پروفیسر غیاث النبی طیب نے بھی خطاب کیا۔کنگ ایڈورڈ میڈیکل یونیورسٹی میں زیر تعلیم طلباء سولہ مختلف ممالک کے پرچم برداروں نے لائبریری ہال میں مہمان خصوصی پروفیسر یاسمین راشد، وزیر صحت پنجاب کا استقبال کیا. وزیر صحت کا استقبال وائس چانسلر کنگ ایڈورڈ میڈیکل یونیورسٹی پروفیسر خالد مسعود گوندل نے کیا۔ اپنے صدارتی خطاب میں پروفیسر یاسمین راشد نے ہیپاٹائٹس سی کی روک تھام، کنٹرول اور علاج کے بارے میں بات کی۔

مزید : میٹروپولیٹن 1