مشرف نے آئین منسوخ نہیں معطل  کیا، اسمبلیاں موجود تھیں،فیاض چوہان

    مشرف نے آئین منسوخ نہیں معطل  کیا، اسمبلیاں موجود تھیں،فیاض چوہان

  



لاہور(نمائندہ خصوصی،مانیٹرنگ ڈیسک) صوبائی وزیر اطلاعات فیاض الحسن چوہان نے آئین کی منسوخ نہیں، معطلی ہوئی، اسمبلیاں موجود تھیں، کل کے فیصلے سے قوم حیران و پریشان ہے، پاکستان کیلئے تین جنگیں لڑنا والا کیسے غدار ہوسکتا ہے۔وزیر اطلاعات پنجاب فیاض الحسن چوہان نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ شوکت عزیز اور زاہد حامد کہاں ہیں؟ اس وقت کی کابینہ اور گورنرز کہاں گئے؟ آئین کے تحت دیگر شامل افراد کیلئے بھی سزا ہے، پنجاب اسمبلی کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ سابق صدر جنرل پرویز مشرف کے متعلق فیصلے کے قانونی اور معاشرتی پہلو ہیں یہ فیصلہ آرٹیکل 6 کے تحت کیا گیا آرٹیکل 6 میں منسوخی کی شق 18 ویں ترمیم کے ذریعے شامل کی گئی پوری پاکستانی قوم حیران و پریشان ہے کہ 2010 کے قانون کا اطلاق 2007 کے ایکٹ پر ہو رہا ہے  جو بھی شامل ہوگا مدد و تعاون میں وہ بھی ویسے ہی آرٹیکل 6 کی کارروائی میں شامل ہو گا۔انہوں نے کہا کہ سب اس بات پر حیران ہیں کہ ایک فرد کا انتخاب کیا گیا اکیلے تو مرغی انڈا نہیں دے سکتی لیکن یہ کیسے ہو سکتا ہے کہ ایک شخص آئین کو معطل کرے زاہد حامد اس وقت کے وزیر قانون نواز شریف حکومت میں شامل رہے۔انہوں نے کہا کہ افواج پاکستان نے پچھلے 12 برسوں میں جو قربانیاں دیں ہیں وہ کسی سے ڈھکی چھپی نہیں ہیں: پچھلے 12 برسوں میں میمو گیٹ سکینڈل کے علاوہ کئی کیس آئے جس سے لوگ سمجھتے تھے کہ ابھی مارشل لاء لگے گا  افواج پاکستان کو اس فیصلے سے ایک جھٹکا لگا ہے آج پورے پاکستان میں سوشل میڈیا اور دیگر پر لوگ مشرف کے حق میں بات کرتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ا گلے تین سے چار روز میں لوگ سڑکوں پر پرویز مشرف کے حق میں نکلیں گے پرویزمشرف نے سعودی عرب میں آپریشن کرکے اللہ کے گھر کو دہشت گردوں سے محفوظ بنایا مشرف بھارتی ایجنڈوں کو بھی منہ توڑ جواب دیتا ہے، انہوں نے کہاکہ محب وطنی کا فیصلہ کیا۔ معاشی دہشت گرد، نواز شریف، شہباز شریف، آصف زرداری، خورشید شاہ اور دیگر نے کرپشن سے ملک کی سیکورٹی کو نقصان پہنچایا۔انہوں نے کہا کہ بلاول بھٹو زرداری آپ کو علم نہیں 12 اکتوبر 1990 کو اصل مارشل لاء لگا یا گیا تھا اس وقت آپ کی ماما نے آپ کے منہ میں فیڈر ڈالا ہوا تھا۔

فیاض الحسن چوہان 

مزید : صفحہ اول


loading...