ہائی کورٹ میں ینگ ڈاکٹرز پر پابندی لگانے کیلئے درخواست دائر

  ہائی کورٹ میں ینگ ڈاکٹرز پر پابندی لگانے کیلئے درخواست دائر

  



ملتان (خبر نگار خصوصی) ہائیکورٹ ملتان بنچ کے جج جسٹس عابد عزیز شیخ نے ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن پر پابندی لگائے جانے کے حوالے سے دائر کی گئی درخواست پر سماعت آج 19 دسمبر کے لئے مقرر کی ہے۔ قبل ازیں فاضل عدالت میں پٹشنر رانا محمد اشرف جمیل اور ملک مرید حسین مکول نے کونسل رانا محمد اقبال کے توسط سے درخواست دائر کرتے ہوئے موقف اختیار کیا تھا کہ ہسپتالوں میں مریض علاج(بقیہ نمبر56صفحہ12پر)

معالجہ کی خاطر جاتے ہیں جنہیں ینگ ڈاکٹرز کی جانب سے کی جانیوالی بے جا ہڑتالوں اور تضحیک آمیز رویہ کی وجہ سے شدید پریشانی کا سامنا ہے جبکہ ینگ ڈاکٹرز سینئر ڈاکٹرز کو بھی پریشان کرتے ہیں۔ مریضوں کے لواحقین کی جانب سے اگر صحیح علاج نہ ہونے کا سوال کیا جائے تو لواحقین کو تشدد کا نشانہ بنایا جاتا ہے جو کہ بالکل غیر قانونی اور قابل دست اندازی جرم ہے جس کے خلاف حکومت کی جانب سے ایکشن لیا جانا ضروری ہے لیکن وہ اپنی سیاسی بقا کے لیے اس معاملے پر توجہ نہیں دیتے ہیں۔ جبکہ ان ڈاکٹرز کے خلاف قتل عمد کی دفعات لگنی چاہیے جبکہ ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن پر مکمل طور پر پابندی عائد کی جائے تاکہ ہسپتال میں جانے والے مریض اور ان کے ورثا کو درپیش مسائل سے بچایا جاسکے تاکہ علاج کے عمل میں کسی دشواری کا سامنا نہ کرنا پڑے۔

دشواری

مزید : ملتان صفحہ آخر