اسلامک یونیورسٹی میں فائرنگ‘ ملزموں کی عدم گرفتاری پر بہاولپور میں ریلی

    اسلامک یونیورسٹی میں فائرنگ‘ ملزموں کی عدم گرفتاری پر بہاولپور میں ریلی

  



بہاولپور(ڈسٹرکٹ رپورٹر)اسلامی جمعیت طلباء کے زیر اہتمام اسلامک یونیورسٹی اسلام آباد میں قوم پرست اور لسانیت پرستوں کے حملے میں سید طفیل الرحمن کی شہادت اور ملزموں کے عدم گرفتاری،پولیس کے جانب دارانہ رویے کیخلاف مسجد الحق سے پریس کلب تک احتجاجی ریلی نکالی گئی۔ریلی کی قیادت نائب امیر صوبہ جماعت اسلامی جنوبی پنجاب سید ذیشان اختر،امیر شہر نصراللہ ناصر،اسلامی جمعیت(بقیہ نمبر40صفحہ12پر)

طلباء کے ناظم راؤ اسامہ منور نے کی۔احتجاجی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے سید ذیشان اختر نے کہا ہے کہ انٹرنیشنل اسلامک یونیورسٹی میں اسلامی جمعیت طلبہ کے بک ایکسپو پر لسانی طلبہ تنظیم کے حملے میں جمعیت کے امیدوار رکنیت سید طفیل کی شہادت انتہائی قابل مذمت ہے۔ اسلام آباد انتظامیہ شرپسند عناصر کو فوری طور پر گرفتار کرے۔کسی بھی طور پر اس واقعے کو نظر انداز نہیں کیا جا سکتا۔ انہوں نے کہا کہ اس افسوسناک واقعے سے قبل مریدکے میں بھی جماعت اسلامی کے لوگوں کو بے گناہ نشانہ بنایا گیا تھا۔ابھی اس کے مجرمان کو گرفتار نہیں کیا گیا تھا کہ یہ واقع ہو گیا۔ساہیوال، وہاڑی،مریدکے اور لاہور میں ہسپتال پر حملے کے بعد یوں محسوس ہوتا ہے کہ جیسے ملک میں اور بالخصوص پنجاب میں قانون نام کی کوئی چیز نہیں۔ جنگل کا قانون رائج ہے۔ پولیس اور دیگر قانون نافذ کرنے والے ادارے اپنی رٹ قائم رکھنے میں مکمل طور پر ناکام ثابت ہو ئے ہیں۔وزیر اعلیٰ براے نام کاغذی کاروائی کرکے وزیر اعظم کو سب اچھا کی رپورٹ بھجوانے کے سوا کچھ نہیں کر رہے۔نصراللہ ناصر نے اپنے خطاب میں حکومت سے مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ سید طفیل شہید کے قاتلوں کوجلد از جلد گرفتار کر کے انصاف کے کٹہرے میں لایا جائے۔تحریک انصاف کے دور حکومت میں لوگوں کو انصاف میسر نہیں۔عوام کے جا ن و مال اور عزت سب کچھ غیر محفوظ ہو چکے ہیں۔ ریلی سے اسلامی جمعیت طلباء کے ناظم راؤ اسامہ منور نے بھی خطاب کیا۔

ریلی

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...