ریڈر خواجہ عاشق حسین کے اعزاز میں تقریب‘ ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج سہیل اکرام اور دیگر شخصیات کی شرکت

  ریڈر خواجہ عاشق حسین کے اعزاز میں تقریب‘ ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج سہیل اکرام ...

  



ملتان (خبر نگار خصوصی) خوش اسلوبی سے فرائض انجام دینے والے ریڈر خواجہ عاشق حسین کے اعزاز میں منعقدہ تقریب سے ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج سہیل اکرام نے خطاب کرتے ہوئے کہا(بقیہ نمبر25صفحہ12پر)

ہے کہ 43 سالہ تجربہ کے بعد ریٹائر ہونے والے ریڈر کو وہ مبارکباد پیش کرتے ہیں، تمام افراد کا مشکور ہوں جنہوں نے الوداعی تقریب کی روایت کو زندہ رکھا ہے اور رب تعالیٰ سے دعا ہے کہ ہماری دنیا اور آخرت کو بہتر بنادے۔ ایڈیشنل سیشن جج ملتان محمد عاصم نے کہا کہ جب وہ ملتان تعینات ہوئے تو پہلے دن ہی ریڈر خواجہ عاشق کو کہا کہ سائلین کو تاریخ وہ خود دیں گے، جس پر انہوں نے بڑی ذمہ داری سے عملدرآمد کیا جب وہ ملتان آئے تو خواجہ عاشق کا بلڈ پریشر ہائی رہتا تھا، لیکن بعدازاں ٹھیک رہنے لگا تو پوچھا کہ یہ تبدیلی کیسے آئی تو جواب ملا کہ تاریخ دینے کی ذمہ داری جو آپ نے اٹھا لی ہے اس کیے پریشانی دور ہوگئی ہے۔انہوں نے خواجہ عاشق کو تجویز دی کہ 43 سالہ تجربہ پر کتاب لکھیں تاکہ تمام اہلکاروں کو آسانی ملے۔ ایڈیشنل سیشن جج فرخ فرید بلوچ نے کہا کہ کامیاب اننگز کھیلنے پر خواجہ عاشق کو مبارکباد پیش کرتے ہیں۔ ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج ملتان سہیل اکرام نے فیملی سربراہ کے طور پر شرکت کی جن کے وہ مشکور ہیں۔ محبت واحد چیز ہے جو تقسیم کرنے سے زیادہ ملتی ہے جس کا ملتان کے لوگوں کے ساتھ اچھا تجربہ رہا ہے۔تقریب سے خواجہ عاشق نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ملک کی ترقی میں عدلیہ کا اہم کردار ہے اور وہ اس ادارے کا ایک ایم جزو ہیں اور فاضل ججز کی مدد کرتے ہیں۔ تمام اہلکاروں سے کہتا ہوں کہ جھوٹ، دھوکہ اور ظلم سے پرہیز کریں تو تمام مشکلات حل ہوجائیں گی اور کامیابی قدم چومے گی۔تقریب کا آغاز تلاوت قرآن پاک سے کیا گیا جس کی سعادت حافظ محمد اسحاق نے حاصل کی جبکہ ہدیہ نعت بیلف محمد طاہر نے پیش کیا۔ تقریب کے اختتام پر ججز صاحبان اور ریٹائر ہونے والے ریڈر خواجہ محمد عاشق کو گلدستہ اور اعزازی شیلڈز پیش کی گئی۔تقریب میں ایڈیشنل سیشن ججز محمد آصف اور حسن احمد نے بھی شرکت کی جبکہ انتظامات کے فرائض کلرک آف کورٹ الطاف حسین بھٹی نے سرانجام دیے۔

تقریب

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...