قبائلی اضلاع میں قائم 72ومین سکلز ڈویلپمنٹ سینٹرز کی مستقبل خطرے میں

  قبائلی اضلاع میں قائم 72ومین سکلز ڈویلپمنٹ سینٹرز کی مستقبل خطرے میں

  



پشاور (سٹی رپورٹر)فاٹا انضمام کے بعد قبائلی اضلاع میں قائم 72ومین سکلز ڈویلپمنٹ سینٹرز کی مستقبل خطرے میں ہے جبکہ مذکورہ سینٹرز میں ہنر سیکھنے والی ہزاروں کی تعداد میں قبائلی خواتین سمیت سینٹرز میں بطور انسٹرکٹرز خواتین اساتذۃ کی بھی مستقبل خطرے میں پڑگئی ہے صوبائی حکومت تا حال مذکورہ سینٹر کے حوالے سے فیصلہ کرنے میں نا کام ہے جسکی وجہ سے سینٹر کی خواتین اساتذہ احتجاج پر ہے اور حکومت سے مطالبہ کر رہے ہیں کہ حکومت قبائلی اضلاع میں موجود ومین سکلز ڈویلپمنٹ سینٹرزمیں خواتین اساتذۃ کو گزشتہ چھ ماہ سے بند تنخواہیں سمیت ملازمت کی مستقلی اور دیگر مراعات دی جائے بصورت دیگر خواتین اساتذہ اپنے مطالبات کے حصول کیلئے احتجاج پر مجبور ہونگے اس حوالے سے گزشت روز خواتین اساتذہ نے پشاور پریس کلب میں بی بی ارم قریشی،غزالہ،مہر شاہ، نسرین راجپوت نے دیگر خواتین اساتذہ کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ پچھلے 15سال سے ہزاروں قبائلی خواتین کو با عزت روزگار فراہم کرنے کیلئے سکلز سینٹرز میں فرائض سر انجام دے رہے ہے اور دہشت گردی کے وقت میں بھی فرائض انجام دیے ہے مگر بد قسمتی سے ہمیں مناسب مراعات نہیں دیے گئے جسکی وجہ سے ضم قبائلی اضلاع میں سکلز ڈویلپمنٹ مراکز بند ہونے کے در پر ہے۔انہوں نے کہا کہ مذکورہ سکلز سینٹرز سے ہزاروں قبائلی خواتین نے ہنر سیکھا اور مذکورہ مراکز میں ہر مرکز سے ہر سال 40خواتین ہنر حاصل کرتی تھیں تاہم حکومت کی عدم دلچسپی اور مراعات نہ ہونے کی وجہ سے سینٹرز میں فرائض دینے والی خواتین اساتذہ قاقوں پر مجبور ہے انہوں نے کہا کہ ومین سکلز ڈویلپمنٹ سینٹرز کی خواتین اساتذہ کی مدت ملازمت دسمبر میں ختم ہونے والی ہے جبکہ حکومت بجائے توسیع دینے کے سکلز سینٹرز کو انڈسٹریز کے شعبہ میں ضم کرنے پر غور کر رہی ہے جو ہمیں کسی صورت قبول نہیں کیونکہ اگر ضم اضلاع میں سکلز سینٹرز بند ہوئے تو ہزاروں قبائلی خواتین ہنر سیکھنے سے نہ صرف محروم ہوجائینگی بلکہ سینٹرز کی اساتذہ بھی متاثر ہو نگی۔انہوں نے کہا کہ پہلے 7ہزار اور 5ہزار پر فرائض انجام دی رے تھے تاہم بعد میں خواتین اساتذہ کو 30ہزار سے 35ہزار روپے کی تنخواہ مقرر کی گئی جبکہ کوئی دیگر مراعات مہاء نہیں ہیں اور جولائی سے یہ تنخواہیں بھی بند ہے۔ومین سکلز ڈویلپمنٹ سینٹرز کی خواتین اساتذہ نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ ملازمت میں مستقلی سمیت پنشن،اولڈ ایج بنیفٹ اور پراویڈنٹ فنڈز دیے جائے تاکہ ومین سکلز ڈویلپمنٹ سینٹرز قبائلی ضم اضلاع میں خواتین کو ہنر مند بنانے کے خدمت کو جاری رکھ سکھے بصورت دیگر احتجاج دھرنا دینگے۔

مزید : صفحہ اول


loading...