مجرم کی لاش کو ڈی چوک لانے اور 3دن لٹکانے کی بات خلاف آئین ہے،جسٹس (ر)ناصرہ جاوید

مجرم کی لاش کو ڈی چوک لانے اور 3دن لٹکانے کی بات خلاف آئین ہے،جسٹس (ر)ناصرہ ...
مجرم کی لاش کو ڈی چوک لانے اور 3دن لٹکانے کی بات خلاف آئین ہے،جسٹس (ر)ناصرہ جاوید

  



لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)جسٹس (ر)ناصرہ جاوید نے سنگین غداری کیس میں سابق صدر کو ڈی چوک میں پھانسی دینے کے فیصلے پر ردعمل دیتے ہوئے کہا کہ مجرم کی لاش کو ڈی چوک لانے اور 3دن لٹکانے کی بات خلاف آئین ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق اسلام آبادکی خصوصی عدالت نے سابق صدر پرویز مشرف کیخلاف سنگین غداری کیس کا تفصیلی فیصلہ جاری کردیا ،تفصیلی فیصلے میں جسٹس وقار احمد سیٹھ اور جسٹس شاہد کریم نے سزائے موت کافیصلہ دیاجبکہ جسٹس نذر اکبر نے فیصلے سے اختلاف کیا ہے ،جسٹس وقار احمد سیٹھ نے فیصلے میں لکھا ہے اگر پھانسی سے قبل پرویز مشرف فوت ہو جاتے ہیں تو ان کی لاش کو لاکر3 دن ڈی چوک میں لٹکایاجائے جسٹس شاہد کریم نے جسٹس وقار احمد سیٹھ کے اس فیصلے سے اختلاف کیاہے۔

جسٹس (ر)ناصرہ جاوید نے سنگین غداری کیس میں سابق صدر کو ڈی چوک میں پھانسی دینے کے فیصلے پر ردعمل دیتے ہوئے کہا کہ مجرم کی لاش کو ڈی چوک لانے اور 3دن لٹکانے کی بات خلاف آئین ہے۔

مزید : قومی /علاقائی /اسلام آباد


loading...