خصوصی عدالت کے جج کیخلاف ریفرنس دائر نہیں کیا جاسکتا ، آئینی ماہرحامد خان وضاحت کردی

خصوصی عدالت کے جج کیخلاف ریفرنس دائر نہیں کیا جاسکتا ، آئینی ماہرحامد خان ...
 خصوصی عدالت کے جج کیخلاف ریفرنس دائر نہیں کیا جاسکتا ، آئینی ماہرحامد خان وضاحت کردی

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)آئینی ماہرحامد خان نے کہاہے کہ قانون کے مطابق کسی جج کیخلاف فیصلے کی بنیاد پر ریفرنس دائر نہیں کیاجا سکتا ، اٹارنی جنرل کو پرویزمشرف سے اتنی زیادہ ہمدردی ہے تو وہ اٹارنی جنرل کے عہدے سے مستعفی ہوکر پرویز مشرف کے وکیل بن جائیں ،ا ن کے بیانات قانون کے خلاف ہیں۔

نجی نیوز چینل 92کے پروگرام میں گفتگوکرتے ہوئے حامد خان نے کہا کہ لگتا ہے کہ جج فیصلہ دیتے وقت جذباتی ہوگئے تھے ،یہ فیصلہ ایک شخص کیخلاف ہے ، اس کے خلاف اپیل کی جاسکتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ عمر قیدیا سزائے موت کا فیصلہ دینا عدالت کی مرضی ہوتی ہے ، اداروں کے درمیان تصادم والی کوئی بات نہیں ہے ۔ انہوں نے کہا کہ جن ججز نے یہ فیصلہ لکھاہے ، ان کیخلاف سپریم جوڈیشل کونسل میں ریفرنس دائر کی بات ہے تو اس پرجج کے خلاف ریفرنس دائر نہیں کیاجاسکتا ۔انہوں نے کہا کہ قانون کے مطابق کسی جج کیخلاف فیصلے کی بنیاد پر ریفرنس دائر نہیں کیاجا سکتا ۔

حامد خان کاکہنا تھاکہ اٹارنی جنرل انورمنصور کی جانب سے بیانات افسوسناک ہیں ، وہ ایسے بیانات دیکر آئین و قانون سے تجاوز کررہے ہیں۔انہوں نے کہاکہ اٹارنی جنرل یہ نہیں کہہ سکتا کہ یہ فیصلہ اس کی پسند کیخلاف آیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اگر اٹارنی جنرل کو پرویزمشرف سے اتنی زیادہ ہمدردی ہے تو وہ اٹارنی جنرل کے عہدے سے مستعفی ہوکر پرویز مشرف کے وکیل بن جائیں ۔

مزید : قومی