لاش گھسیٹنے کانوٹ لکھنے والے جج کیخلاف ریفرنس دائر ہوناچاہئے ، پیپلز پارٹی کے سینئر رہنما نے بھی حکومتی موقف کی تائید کردی

لاش گھسیٹنے کانوٹ لکھنے والے جج کیخلاف ریفرنس دائر ہوناچاہئے ، پیپلز پارٹی ...
لاش گھسیٹنے کانوٹ لکھنے والے جج کیخلاف ریفرنس دائر ہوناچاہئے ، پیپلز پارٹی کے سینئر رہنما نے بھی حکومتی موقف کی تائید کردی

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)پیپلزپارٹی کے رہنمااعتزاز احسن نے کہاہے کہ خصوصی عدالت کے فیصلے میں جج نے جولکھا ہے ،ایساطالبان نے نجیب اللہ کی لاش کے ساتھ کیاتھا ،اس کی لاش کو سڑکوں پرگھسیٹا گیاتھا ، عدلیہ میں ایسے جج کیخلاف سپریم جوڈیشل کونسل میں ریفرنس دائر ہوناچاہئے کیونکہ کسی جج کوہٹانے کایہی طریقہ ہے ۔

نجی نیوز چینل 92نیوز میں گفتگو کرتے ہوئے اعتزاز احسن نے کہا کہ خصوصی عدالت کے فیصلے میں جج نے جولکھا ہے ،ایساطالبان نے نجیب اللہ کی لاش کے ساتھ کیاتھا ۔اس کی لاش کو سڑکوں پرگھسیٹا گیاتھا ۔انہوں نے کہاکہ عدلیہ میں ایسے جج کیخلاف سپریم جوڈیشل کونسل میں ریفرنس دائر ہوناچاہئے کیونکہ کسی جج کوہٹانے کایہی طریقہ ہے اورذہنی خلل کے تحت کارروائی ہوسکتی ہے ۔

اعتزاز احسن کا کہنا تھا کہ پرویز مشرف نے دستور کی سنگین خلاف ورزی کی تھی ،کوئی اچھا ہو یا برا ہو لیکن اگر کوئی پانچ چیف جسٹس صاحبان کوبچوں سمیت گرفتار کرلے تویہ آئین کی سنگین خلاف ورزی نہیں ہوگی تو اور کیا ہوگی ؟ انہوں نے کہا کہ 12اکتوبر کو بھی منتخب وزیراعظم کی حکومت کوختم کرکے آئین و قانون کی سنگین خلاف ورزی کی گئی ،یہ عمل ایک ہی تھا کہ وزیر اعظم یا چیف جسٹس کوبچوں سمیت گرفتار کرلینا غلط ہے ۔

مزید : قومی