”اتنا زیرک جج،اتنا بڑا فیصلہ اور ایسا متنازعہ پیرا؟“اینکر پرسن طلعت حسین نے جج وقار سیٹھ کی جانب سے لکھے گئے پیرا 66سے متعلق سب سے الگ سوال اٹھا دیا

”اتنا زیرک جج،اتنا بڑا فیصلہ اور ایسا متنازعہ پیرا؟“اینکر پرسن طلعت حسین ...
”اتنا زیرک جج،اتنا بڑا فیصلہ اور ایسا متنازعہ پیرا؟“اینکر پرسن طلعت حسین نے جج وقار سیٹھ کی جانب سے لکھے گئے پیرا 66سے متعلق سب سے الگ سوال اٹھا دیا

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن )سابق صدرپرویز مشرف کے خلاف سنگین غداری کیس کا تفصیلی فیصلہ سامنے آگیا جس کے پیرا 66میں جج وقار سیٹھ نے پرویز مشرف کو غدار قرار دیتے ہوئے پانچ بار سزائے موت اور پھانسی سے قبل مرنے کی صورت میں لاش گھسیٹ کر ڈی چوک لانے اور پھر تین دن تک لٹکانے کا حکم دے دیا ۔میڈ یا میں خصوصی عدالت کے جج کی جانب سے لکھنے جانے والے فیصلے کے اس پیرا پر بہت زیادہ بحث کی جا رہی ہے اور ان الفاظ پر شدید اعتراض کیا جا رہا ہے ،پاک فوج کے ترجمان ادارے آئی ایس پی آر کے ڈی جی میجر جنرل آصف غفور نے بھی فیصلے کے الفاظ پر اپنے تحفظات کا اظہار کیا ہے ۔

اب اس حوالے سے اینکر پرسن طلعت حسین نے بھی سوال اٹھا دیا ہے ۔مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ ٹوئٹر پر پیغام دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اگر جج سیٹھ پیرا 66 نہ لکھتے تو بھی فیصلہ تاریخی ہی رہتا۔مگر ان الفاظ کے ساتھ اپنے ہی فیصلے کی اخلاقی اور قانونی گت بنوانے کا بہترین بندوبست کر دیا ہے۔ اور پھر عدلیہ کے خلاف ایک محاز بھی کھڑا ہو گیا ہے۔ اتنا زیرک جج، اتنا بڑا فیصلہ اور ایسا متنازعہ پیرا؟ کیا مقصد تھا؟۔

مزید : قومی