اسسٹنٹ پروفیسررہائش گاہ کیس، کمشنر فیصل آباد ودیگر مدعاعلیہان سے جواب طلب

 اسسٹنٹ پروفیسررہائش گاہ کیس، کمشنر فیصل آباد ودیگر مدعاعلیہان سے جواب طلب

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہورہائی کورٹ نے فیصل آباد میں تعینات خاتون اسسٹنٹ پروفیسر کو دو برس پہلے والی رہائش گاہ دوبارہ دینے کا نوٹیفیکیشن معطل کر تے ہوئے کمشنر فیصل آباد اوردیگر مدعاعلیہان کو نوٹس جاری کرتے ہوئے دو ہفتوں تک جواب طلب کر لیا ہے،مسٹرجسٹس ساجد محمود سیٹھی نے اسسٹنٹ پروفیسرز عروج اصغر کی درخواست پر سماعت کی،درخواست گزار کی طرف سے اشتیاق اے خان ایڈووکیٹ نے موقف اختیار کیا کہ وہ ایوب ریسرچ سنٹر فیصل آباد میں بطور اسسٹنٹ پروفیسر فرائض انجام دے رہی ہیں، انہیں فیصل آباد میں سرکاری رہائش گاہ بھی الاٹ کی گئی لیکن وومن کالج فیصل آباد میں صحرائی نامی خاتون کی بطور پرنسپل تعیناتی کی گئی جس کے بعدنسیم صحرائی نے دو برس پہلے الاٹ کی گئی سرکاری رہائش گاہ دوبارہ حاصل کرنے کے لئے کمشنر کو درخواست دے دی،عدالت سے استدعاہے کہ کمشنر فیصل آباد کا درخواست گزار کو سرکاری رہائش گاہ تبدیل کرنے کاحکم کالعدم قرار دیاجائے۔

رہائش گاہ کیس 

مزید :

صفحہ آخر -