ملتان میں ڈیمانڈ اور سپلائی کی مانیٹرنگ سے مہنگائی کم

  ملتان میں ڈیمانڈ اور سپلائی کی مانیٹرنگ سے مہنگائی کم

  

 ملتان (نیوز رپورٹر)2020حکومت کی بہترین حکمت عملی اور مقامی اجناس کی مارکیٹ میں آمد سے مہنگائی کا زور ٹوٹ گیا ہے اور اشیائے ضروریہ اور سبزی کے نرخوں میں واضح کمی آ گئی ہے،ایک ماہ کے دوران ٹماٹر،پیاز اور آلو کے نرخ 50فیصد تک گر گئے ہیں،گزشتہ روزڈپٹی کمشنر عامر خٹک کی زیر صدارت اشیائے ضروریہ کے نرخوں کا تقابلی جائزہ بارے اجلاس منعقد ہوا،اجلاس میں پرائس مجسٹریٹس اورسیکرٹری مارکیٹ کمیٹی عبدالخالق ناصر نے شرکت کی،اجلاس(بقیہ نمبر26صفحہ6پر)

 میں ماہ نومبر اور دسمبر میں اشیائے خوردو نوش کی قیمتوں کا تقابلی جائزہ لیا گیا۔اجلاس میں بریفننگ دیتے ہوئے بتایا گیا کہ ایک ماہ کے دوران ٹماٹر کے نرخ میں 100 روپے فی کلو کمی واقع ہوئی ہے،نومبر میں ٹماٹرکا نرخ 180 روپے کلو تھا جبکہ دسمبر میں 80 روپے کلو فروخت ہورہا ہے،آلو کا ریٹ 85 روپے کلو گرام سے کم ہو کر50 روپے فی کلو ہو گیا ہے،پیاز75 روپے کلو سے گر کر44روپے فی کلو پرچون میں فروخت ہو رہا ہے جب کہ تمام موسمی سبزیاں اوسطا'' 20 روپے سے 30 فی کلو مارکیٹ میں فروخت ہو رہی ہیں،بریفنگ میں بتایا گیا کہ پاکستان میں پھلوں کی بھرپور پیداوار کی وجہ سے  امسال نرخ انتہائی اعتدال پر رہے ہیں،دالوں اور چاول کے نرخوں میں بھی واضح کمی آئی ہے،باسمتی کرنل چاول کے نرخ 20 روپے فی کلو گر گئے ہیں،باسمتی کرنل کچی اور پکی کی قیمت138 روپے کم ہو کر118 روپے فی کلو ہو گئی ہے،دالوں میں مسور10روپے،چناباریک7روپے، ماش موٹی11روپے اور ماش دھلی7 روپے فی کلو نرخوں میں کمی آئی ہے،110روپے فی کلو میں فروخت ہونیوالی چینی اب78روپے کلو میں دستیاب ہے۔اس موقع پر ڈپٹی کمشنر عامر خٹک کااشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں واضح کمی پر اطمینان کا اظہار کیا ہے اور کہا ہے کہ حکومت کی بہتر حکمت عملی اور انتظامیہ کی بھر پور مانیٹرنگ کے نتائج سامنے آ گئے ہیں،غلہ منڈی اور سبزی و فروٹ منڈی میں ڈیمانڈ اور سپلائی کی مانیٹرنگ جاری رکھی جائے،سبزی منڈی میں کاشتکاروں کوکسان پلیٹ فارم پراجناس فروخت کرنیکا پورا موقع دیا جائے،کسان پلیٹ فارم سے کاشتکار اور صارف دونوں کو فائدہ ہورہا ہے،عامر خٹک نے مزید کہا کہ پرائس مجسٹریٹس اشیائے ضروریہ کی مقررہ قیمتوں پر فروخت یقینی بنانے کے لئے مہم جاری رکھیں۔دریں اثناء ادارہ شماریات پاکستان نے مہنگائی کی ہفتہ وار رپورٹ جاری کردی ہے جس کے مطابق17دسمبر2020 کواختتام پذیر ہونے والے ہفتہ کے دوران مہنگائی کی شرح 8.24فیصدجبکہ گزشتہ ہفتہ کے مقابلہ میں یہ شرح منفی0.22فیصد رہی ہے۔ ملک کے 17بڑے شہروں سے 51اشیا کی قیمتوں کاتقابلی جائزہ لیاگیا جس میں سے20اشیاکی قیمتوں میں اضافہ8اشیا کی قیمتوں میں کمی جبکہ 23اشیا کی قیمتوں میں استحکام رہا ہے۔اس ہفتہ کے دوران ملک میں الیکٹرک چارجز،لہسن،پیٹرول،ھائی سپیڈ ڈیزل،کیلا، انڈہ(فارمی)،واشنگ سوپ،چینی،کوکنگ آئل،دال چنا،ویجیٹیبل گھی،دال ماش،مٹن، خشک دودھ، ایل پی جی(سلنڈر)،چاول اری6/9،گھی(کھلا)،آگ جلانے والی لکڑی، خوردنی تیل کی قیمتوں میں اضا فہ ٹماٹر،آلو، پیاز،چکن(زندہ)،دال مونگ، دال مسور،گڑ،آٹاکی قیمتوں میں کمی جبکہ بیف پلیٹ،بیف،دال پلیٹ، دہی،چاول باسمتی(ٹوٹا)، دودھ(تازہ)،ماچس،جارجٹ، موٹالٹھا، چائیکاکپ، ڈبل روٹی،چائے،انرجی سیور،صابن، سگریٹ، لان(کپڑا)،نمک، سرخ مرچ(پسی ہوئی)، گندم، مٹی کا تیل،سینڈل،چپل،گیس چارجز،لوکل کال کی قیمتوں میں استحکام رہا ہے۔

مہنگائی کم

مزید :

ملتان صفحہ آخر -