مختلف شہروں میں خوفناک حادثے،7افراد جاں بحق، متعددزخمی

 مختلف شہروں میں خوفناک حادثے،7افراد جاں بحق، متعددزخمی

  

  رحیم یارخان، مظفر گڑھ(بیورو رپورٹ، نمائندہ پاکستان، نامہ نگار) قومی شاہراہ پر ٹرالر نے موٹر سائیکل سوار کچل ڈالے، ٹریکٹر ٹرالی ایک ہی خاندان کے موٹرسائیکل (بقیہ نمبر2صفحہ6پر)

سواروں پر چڑھ گئی، تیز رفتاری کے باعث موڑ کاٹتے ہوئے کپاس سے لوڈ ٹریکٹر ٹرالی الٹ گئی، مزدور دب گیا، موٹر سائیکلوں میں تصادم، 4 جاں بحق، تین بچوں سمیت پانچ زخمی ہوگئے تفصیل کے مطابق پہلا حادثہ فرید آباد کے رہائشی 40 سالہ محمد عمر کے ساتھ پیش آیا جو اپنے عزیز اور نسرین بی بی کے ہمراہ موٹر سائیکل نمبری RNL 2225 پر گھر جارہا تھا کہ قومی شاہراہ عبور کرنے کے دوران ٹرالر نے کچل ڈالا جس کے نتیجہ میں محمد عمر زخموں کی تاب نہ لاتے موقع پر ہی دم توڑ گیا جبکہ نسرین بی بی ٹانگ ٹوٹنے کے باعث شدید زخمی ہوگئی جبکہ قریبی عزیز معجزانہ طور پر محفوظ رہا۔ دوسرا حادثہ چک 69 اے کے رہائشی نوید احمد کے ساتھ پیش آیا جو اپنی بیوی سعیدہ اور تین بچوں کے ہمراہ موٹر سائیکل پر جارہا تھا کہ چک 87 اے بینک کے نزدیک سامنے سے آنیوالی ٹریکٹر ٹرالی سے ٹکرا گیا جس کے نتیجہ میں 27 سالہ نوید احمد زخموں کی تاب نہ لاتے موقع پر ہی دم توڑ گیا جبکہ بیوی سعیدہ بیٹا حسنین، عبداللہ اور بیٹی فاطمہ شدید زخمی ہوگئے جنہیں فوری طور پر ریسکیو کی مدد سے طبی امداد کیلئے ہسپتال منتقل کردیا گیا جبکہ ٹریکٹر ٹرالی ڈرائیور ٹریکٹر ٹرالی موقع پر چھوڑ کر فرار ہوگیا۔ تیسرا حادثہ ہارون آباد کے رہائشی 23 سالہ محمد حسن کے ساتھ پیش آیا جو کہ ٹریکٹر ٹرالی پر مزدوری کرتا تھا گزشتہ روز ٹریکٹر ٹرالی کپاس سے لوڈ کر کے فیکٹری لے جارہا تھا کہ تیز رفتاری کے باعث موڑ کاٹتے ہوئے ٹریکٹر ٹرالی الٹ گئی اور 23 سالہ محمد حسن دب کر زخموں کی تاب نہ لاتے موقع پر ہی دم توڑ گیا۔ جبکہ ٹریکٹر ٹرالی ڈرائیور ٹریکٹر ٹرالی موقع پر چھوڑ کر فرار ہوگیا جبکہ چوتھا واقعہ بھٹہ واہن کے رہائشی 40 سالہ سعید احمد کے ساتھ پیش آیا جو موٹر سائیکلوں کے تصادم میں شدید زخمی ہوگیا تھا کو فوری طور پر طبی امداد کیلئے ہسپتال منتقل کیا گیا جہاں 40 سالہ سعید احمد جانبر نہ ہوپایا اور زخموں کی تاب نہ لاتے دم توڑ گیا۔  گھریلو ناچاقی کے باعث 40 سالہ خاتون لاہور سے کراچی جانیوالی مال بردار ٹرین کے سامنے کود گئی جبکہ والدین کی ڈانٹ سے دلبرداشتہ 20 سالہ نوجوان نے زہریلی گولیاں کھالیں، دونوں جاں بحق  ہوگئے تفصیل کے مطابق اقدام خود کشی کا پہلا واقعہ باکھل لاڑ کی رہائشی 40 سالہ شہناز بی بی کے ساتھ پیش آیا جس نے گھریلو ناچاقی سے دلبرداشتہ ہوکر سہجہ کے نزدیک لاہور سے کراچی جانیوالی مال بردار ٹرین کے سامنے کود کر خود کشی کرلی جو زخموں کی تاب نہ لاتے موقع پر ہی دم توڑ گئی۔ اسی طرح چک 72 این پی کے رہائشی 20 سالہ عدنان نے آوارہ گردی کرنے پر والدین کی ڈانٹ سے دلبرداشتہ ہوکر بھاری مقدار میں زہریلی گولیاں کھالیں جو طبی امداد کے باوجود جانبر نہ ہوپایا اور دم توڑ گیا۔ ہسپتال انتظامیہ نے کارروائی کے بعد نعش تدفین کیلئے ورثاکے حوالے کردی۔  سیڑھی بجلی کی تاروں سے ٹکرا گئی، پیٹرول پمپ ملازم کرنٹ لگنے سے ہلاک  ہوگئے ترنڈہ سوائے خان کا رہائشی اللہ دتہ جو کہ پیٹرول پمپ پر ملازم تھا، پیٹرول پمپ کی سیڑھی اٹھا کر دوسری جگہ منتقل کررہا تھا کہ اچانک سیڑھی اوپر سے گزرنے والی 11 ہزار وولٹیج بجلی کی تاروں سے ٹکرا گئی، کرنٹ لگنے کے نتیجہ میں ملازم اللہ دتہ موقع پر ہی دم توڑ گیا۔ ہسپتال انتظامیہ نے ہلاک کی تصدیق کرتے ہوئے نعش تدفین کیلئے ورثاکے حوالے کردی۔  35 سالہ نامعلوم شخص لاہور سے کراچی جانیوالی عوام ایکسپریس سے گر کر شدید زخمی، انتہائی تشویشناک حالت میں طبی امداد کیلئے ہسپتال منتقل، شناخت نہ ہوپائی، تفصیل کے مطابق گزشتہ روز 35 سالہ نامعلوم شخص چک 72 پی کے نزدیک لاہور سے کراچی جانیوالی عوام ایکسپریس سے گر کر شدید زخمی ہوگیا جسے ریلوے ٹریک کے نزدیک پڑا ہوا دیکھ کر مقامی افراد نے ریسکیو عملہ کو اطلاع دی جس نے موقع پر پہنچ کر ٹرین سے گرنے والے اس نامعلوم شخص کو طبی امداد کیلئے ہسپتال منتقل کردیا جہاں حالت بدستور تشویشناک بیان کی جارہی ہے اور تاحال شناخت نہ ہوپائی ہے۔  مظفرگڑھ کی تحصیل کوٹ ادو میں  ولو والا ہیڈ پر ریڑھی اور کار میں تصادم جس کے نتیجے میں 4 بچوں سمیت سات افراد زخمی زخمیوں کو ریسکیو 1122 کوٹ ادو کی ٹیم نے جائے حادثہ پر پہنچ کر ابتدائی طبی امداد فراہم کرنے کے بعد تحصیل ہیڈکوارٹر ہسپتال کوٹ ادو منتقل کر دیا ہے جہاں سے  تنویر نامی ایک زخمی  کو تشویشناک حالت کے پیش نظر نشتر ہسپتال ملتان ریفر کر دیا گیا ہے ریسکیو زرائع کے مطابق حادثہ کار ڈرائیور کی غفلت اور تیز رفتاری کے باعث پیش آیا ہے، ڈرائیور کو تھانہ دائرہ دین پناہ پولیس نے موقع پر پہنچ کر حراست میں لیکر قانونی کارروائی کا آغاز کردیا ہے۔

حادثات

مزید :

ملتان صفحہ آخر -