پرائمری اساتذہ کی بندتنخواہوں اوربقایاجات کی ادائیگی سے متعلق رپورٹ طلب

پرائمری اساتذہ کی بندتنخواہوں اوربقایاجات کی ادائیگی سے متعلق رپورٹ طلب

  

پشاور(نیوزرپورٹر)پشاورہائیکورٹ نے ایلیمنٹری اینڈ سکینڈری ایجوکیشن فاؤنڈیشن سے پرائمری اساتذہ کی بندتنخواہوں اوربقایاجات کی ادائیگی سے متعلق رپورٹ طلب مانگ لی ہے جبکہ صوبائی حکومت نے اس مقصد کیلئے ڈیڑھ کروڑ روپے کا چیک بھی جاری کردیا قائم مقام چیف جسٹس قیصر رشید خان اور جسٹس ارشدعلی پر مشتمل بنچ نے توہین عدالت کی درخواست پر سماعت شروع کی تودرخواست گزاروں کے وکیل مطیع اللہ مروت اور فاؤنڈیشن کیجانب سے بیرسٹر ابراہیم خان بھی عدالت میں پیش ہوئے۔ بیرسٹر ابراہیم خان نے عدالت کو بتایا کہ محکمہ خزانہ نے 150ملین روپے کا چیک جاری کردیا ہے جو فاؤنڈیشن کے اکاؤنٹ میں جمع ہوگیاہے اوران اساتذہ کو تنخواہوں اور بقایاجات کی مد میں رقم دینے کا سلسلہ شروع کیاجائیگا۔مردوزنانہ پرائمری اساتذہ کے مطابق انہیں 2013میں مستقل کیا گیا لہذا انہوں نے 2013سے اب تک کے بقایاجات دینے کی بھی استدعا کی ہے اور بتایا کہ 8ماہ سے انکی تنخواہیں بھی بند ہیں۔انہوں نے بتایا کہ انہیں بہت ہی قلیل تنخواہ دی جاتی ہے۔دورکنی بنچ نے دلائل مکمل ہونے پر تنخواہوں کی ادائیگی سے متعلق رپورٹ طلب کرتے ہوئے سماعت 26جنوری تک ملتوی کردی۔ 

مزید :

پشاورصفحہ آخر -