کٹ گاڑیوں کی  پکڑ دھکڑ فوری طور پر بند کرنے کا مطالبہ

کٹ گاڑیوں کی  پکڑ دھکڑ فوری طور پر بند کرنے کا مطالبہ

  

تیمر گرہ (بیورورپورٹ)کٹ گاڑیوں کی پکڑ دھکڑ،جماعت اسلامی دیرلویر نے راست اقدام اٹھانے کی دھمکی دیدی گاڑیوں کی پکڑ دھکڑ فوری طور پر بند کرنے کا مطالبہ۔ اس حوالے سے جماعت اسلامی کی سیاسی کمیٹی کا اجلاس زیر صدارت ڈسٹرکٹ ناظم حاجی محمد رسول خان بلامبٹ جماعت اسلامی کے دفتر میں منعقد ہوا جس میں جماعت اسلامی کے ذمہ داران نے شرکت کی۔اجلاس کے بعد تفصیلات بتاتے ہوئے ملک محمد رسول خان نے کہا کہ ملاکنڈ ڈویژن بھرمیں ایک لاکھ کے لگ بھگ کٹ گاڑیاں موجود ہے جن سے ہزاروں خاندانوں کا کاروبار وابستہ ہے،قدرتی آفات اور بعدازاں عسکریت پسندی سے متاثرہ علاقہ ملاکنڈ ڈویژن میں کورونا کے باعث لاک ڈاؤن نیلوگوں کو معاشی طور پر دیوالیہ کر دیا ہے کٹ گاڑیوں کیخلاف آپریشن سے علاقہ میں امن وامان کی خرابی بشمول بے روزگاری کی ایک نئی لہر آنے کا خطرہ ہے۔انہوں نے کہا کہ کہ مقامی انتظامیہ اس وقت کیوں خاموش تماشائی کا کردار ادا کررہی تھی جس وقت پنجاب سے سرمایہ کار دھڑا دھڑ سکریپ مال ملاکنڈڈویژن لاکر فروخت کر رہے تھے جن سے بعد ازاں یہ گاڑیاں تیار کی گی، غریب لوگوں نے مال مویشی اور زیورات بیچ کر یہ گاڑیاں خریدی ہے۔انہوں نے کہا کہ بغیر کسی وارننگ کے ہنگامی بنیادوں پر ان گاڑیوں کے خلاف گرینڈ آپریشن کا فیصلہ عوامی حلقوں کو کسی صورت قابل قبول نہیں جس کے خلاف بھرپور احتجاج کیا جائے گا اور جلدہی فیصلہ کن احتجاج کو حتمی شکل دینے کیلئے آل پارٹیز کانفرنس طلب کی جائے گی جس میں سماجی تنظیموں کو بھی شامل کیا جائے گا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -