وہ سڑک جس پر الیکٹرک گاڑی چلے تو خود بخود چارج بھی ہوتی رہے

وہ سڑک جس پر الیکٹرک گاڑی چلے تو خود بخود چارج بھی ہوتی رہے
وہ سڑک جس پر الیکٹرک گاڑی چلے تو خود بخود چارج بھی ہوتی رہے

  

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) الیکٹرک گاڑیوں کے ساتھ جو سب سے بڑی پریشانی مالک کو ملتی ہے وہ اس گاڑی کی ’رینج‘ ہے کہ یہ ایک بار بیٹری چارج کرنے پر کتنا سفر کرتی ہے۔ برطانیہ میں اب لوگوں کو اس پریشانی سے نجات دلانے کا انتہائی حیران کن طریقہ ڈھونڈ نکالا گیا ہے۔ میل آن لائن کے مطابق برطانیہ کے شہر کوینٹری میں ایسی سڑکیں تعمیر کرنے کا منصوبہ شروع ہونے جا رہا ہے جو الیکٹرک گاڑیوں کو ’ری چارج‘ بھی کیا کریں گی۔ان سڑکوں پر سفر کرتے ہوئے گاڑیاں خود بخود ری چارج ہوتی رہیں گی اور لوگوں کو گاڑیوں کی ’رینج‘ کی پریشانی سے نجات مل جائے گی۔

رپورٹ کے مطابق لاکھوں پاﺅنڈ مالیت کے اس منصوبے میں سڑک کے نیچے الیکٹرک کوائلز نصب کی جائیں گی، جن سے الیکٹرک گاڑی کے ’رِم‘ میں لے ریسیور کرنٹ موصول کریں گے اور کنٹرولر کو دیں گے۔ یہ کنٹرولر اس کرنٹ کو گاڑی کی بیٹری کی طرف بھیجے گا اور بیٹری ری چارج ہوتی رہے گی۔ یہ تمام عمل گاڑی کے سفر کے دوران ہی ہو گا اور اس کے لیے لوگوں کو گاڑی روکنی نہیں پڑے گی۔ یہ منصوبہ کوینٹری سٹی کونسل کی قیادت میں شروع ہونے جا رہا ہے۔ اس منصوبے کے دیگر شراکت داروں میں ’سینیکس‘ (Cenex)، کوینٹری یونیورسٹی، حب جیکٹ (Hubject)، مڈلینڈز کنیکٹ، نیشنل ایکسپریس، ٹرانسپورٹ فار ویسٹ مڈلینڈز اور ٹویوٹا تسوشو یو کے لمیٹڈشامل ہیں۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -