جی آئی ڈی سی کے226ارب روپے کہاں ہیں؟ کامران خان کے پروگرام میں الزام لگنے کے بعد سابق وزیر خزانہ نے بھی جواب دے دیا

جی آئی ڈی سی کے226ارب روپے کہاں ہیں؟ کامران خان کے پروگرام میں الزام لگنے کے ...
جی آئی ڈی سی کے226ارب روپے کہاں ہیں؟ کامران خان کے پروگرام میں الزام لگنے کے بعد سابق وزیر خزانہ نے بھی جواب دے دیا

  

لندن(ڈیلی پاکستان آن لائن)دنیا نیوز کے پروگرام ’آج کامران خان کے ساتھ‘ میں دو روز قبل سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی اور مشیر برائے پٹرولیم ندیم بابر کے درمیان ہونے والے مناظرہ میں ندیم بابر نے کہا تھا کہ سابقہ حکومت نے جی آئی ڈی سی کی مد میں جو رقم اکھٹی کی وہ ہمیں نہیں ملی۔سابقہ حکومت بتائے وہ پیسے کہاں گئے؟اس پیسے سے پائپ لائن تیار ہونا تھی جو نہیں ہوئی۔ندیم بابر کے اس سوال پر سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار کی جانب سے سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر ویڈیو پیغام جاری کیا گیا ہے جس میں انہوں جی آئی ڈی سی کے پیسوں کے حوالے سے وضاحت کی ہے ۔

ویڈیو میں اسحاق ڈار کا کہنا تھا کہ پاکستان میں کوئی آمدنی،کوئی قرض یا جی آئی ڈی سی یہ سب کچھ پاکستانی قوم کے اکاونٹ اسٹیٹ بنک میں جاتا ہے جس کو ایف سی ایف کہا جاتا ہے۔کسی بھی قسم کے اخراجات کے لئے ادائیگی بھی وہی سے کی جاتی ہے،جس انسان کو یہ نہیں پتہ کہ جی آئی ڈی سی کے پیسے کہاں جاتے ہیں؟مجھے حیرانگی ہے کہ وہ پاکستان کے سابق وزیراعظم شاہدخاقان عباسی سے الجھ رہا تھا۔اس سے زیادہ افسوس مجھے کامران خان پر جو اس کی ٹویٹ کررہے ہیں، ان کو تو پتہ ہے کہ پیسہ کہاں جاتے ہیں۔یہ پیسے اسٹیٹ بینک کے پاس گئے اور وہ اسکا محافظ ہے۔انہوں نے ندیم بابر کو سٹرینجر قرار دیتے ہوئے کہا کہ وہ پارلیمنٹ کے ممبر نہیں۔

مزید :

قومی -